ہفتہ, جنوری 15 Live
Shadow
سرخیاں
قازقستان ہنگامے: مشترکہ تحفظ تنظیم کے سربراہ کا صورتحال پر قابو کا اعلان، امن منصوبے کی تفصیلات پیش کر دیںبرطانوی پارلیمنٹ میں منشیات کا استعمال: اسپیکر کا سونگھنے والے کتے بھرتی کرنے کا عندیاامریکی سی آئی اے اہلکاروں کے ایک بار پھر کم عمر بچوں بچیوں کے ساتھ جنسی جرائم میں ملوث ہونے کا انکشافامریکہ کا مشرقی افریقہ میں تاریخ کے سب سے بڑے فوجی آپریشن کا اعلان: 1 ہزار سے زائد مزید کمانڈو تیارروسی صدر کی ثالثی: آزربائیجان اور آرمینیا کے مابین سرحدی جھڑپیں ختم، سرحدی حدود کے تعین پر اتفاق، جنگ سے متاثر آبادی اور دیگر انسانی حقوق کے تحفظ کی بھی یقین دہانینائیجیر: فرانسیسی فوج کی فائرنگ سے 2 شہری شہید، 16 زخمیامریکی فوج میں ہر 4 میں سے 1 عورت اور 5 میں سے 1 مرد جنسی زیادتی کا نشانہ بنتا ہے، بیشتر خود کشی کر لیتے، کورٹ مارشل کے خوف سے کوئی آواز نہیں اٹھاتا: سابقہ اہلکارروس کا غیر ملکی سماجی میڈیا کمپنیوں پر ملک میں کاروباری اندراج کے لیے دباؤ جاری: رواں سال کے آخر تک عمل نہ ہونے پر پابندی لگانے کا عندیاامریکہ ہائپر سونک ٹیکنالوجی میں چین اور روس سے بہت پیچھے ہے: امریکی جنرل تھامپسنامریکی تفریحی میڈیا صنعت کس عقیدے، نظریے اور مقصد کے تحت کام کرتی ہے؟

دنیا تیل کے بدلے ویکسین دے دے، بھیک نہیں مانگیں گے: وینزویلا کے صدر کا مغربی معاشی پابندیوں کے سامنے جھکنے سے انکار

وینزویلا کے صدر نیکولس مادورو نے دنیا سے تیل کے بدلے ویکسین دینے کی درخواست کر دی ہے۔ وینزویلی صدر کا کہنا تھا کہ ہمارے پاس تیل ہے، دنیا میں گاہک ہیں لیکن امریکی معاشی پابندیوں کے باعث ہم نہ تو اسے بیچ سکتے ہیں اور نہ وائرس کے خلاف تحفظ کے لیے ویکسن خرید سکتے ہیں۔ صدر مادورو کا کہنا تھا کہ ہم کسی سے بھیک نہیں مانگیں گے، اگر کوئی تیل کے بدلے ویکسین دینا چاہے تو ضرور لیں گے۔

یاد رہے کہ امریکہ نے وینزویلا کے 7 ارب ڈالر اور دیگر اثاثہ جات منجمند کر رکھے ہیں اور معاشی پابندیوں کے باعث ملک شدید معاشی بحران کا شکار ہے۔

گزشتہ ہفتے ملک کے نائب صدر ڈیلسی رادریگوئیز نے بھی بین الاقوامی بینکوں سے درخواست کی تھی کہ مغربی دباؤ کو مسترد کرتے ہوئے کم ازکم انکے کھاتے کھول دیے جائیں تاکہ وینزویلا ویکسین خرید سکے، تاہم کوئی شنوائی نہ ہوئی۔ یاد رہے کہ وینزویلا نے کچھ عرصہ قبل عدالت کے ذریعے برطانوی بینک میں منجمند ملکی سونا واپس لینے کی کوشش کی تھی تاہم اس کے خلاف مغربی ممالک نے مقامی حزب اختلاف کو بطور دعوے دار کھڑا کر دیا اور ملکی اثاثہ جات متنازعہ ہو گئے۔

وینزویلا کورونا وائرس کی پہلی دو لہروں کے دوران کافی حد تک محفوظ رہا، اور یہ جنوبی امریکہ کے کم ترین متاثرہ ملکوں میں شامل تھا تاہم وائرس کی نئی یا برطانوی قسم نے وینزویلا میں بھی شدید تباہی مچائی ہے اور 21 مارچ سے اب تک ڈیڑھ لاکھ سے زائد مریضوں کا اندراج ہوا ہے جبکہ 1543 کی موت ہو گئی ہے۔ ایسے حالات میں حکومت پر ویکسین کے لیے دباؤ بڑھ رہا ہے۔

حکومت نے استرا زینیکا کے بعدازاثرات کے باعث ملک میں اس پر پابندی لگا دی ہے لیکن پابندیوں کے باعث کسی بھی ویکسین کو خریدنا ملک کے لیے مشکل ہو گیا ہے۔

وینزویلا نے روسی سپوتنک5 اور چینی سائنو فرم ویکسین کی منظوری دے دی ہے، روس نے وینزویلا کو 1 کروڑ ویکسین پہلے ہی فراہم کر دی ہیں، تاہم ملکی ضرورت اس سے کئی زیادہ ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us