ہفتہ, April 9 Live
Shadow
سرخیاں
افغانستان میں امریکی فوج کی جانب سے تشدد کی تربیت کے لیے بلوچی قیدی کو استعمال کرنے کا انکشافہندوستانی میزائل کا مبینہ غلطی سے پاکستانی حدود میں گرنے کا واقعہ: امریکہ کی طرف سے متعصب جبکہ چین کی جانب سے نصیحت آمیز ردعملمیٹا آسٹریلوی سیاستدانوں کو سائبر حملوں اور جھوٹی خبروں سے بچنے کی تربیت دے گییوکرین: مغربی ممالک سے آئے 180 سے زائد جنگجو ہوائی حملے میں ہلاک، روس کی مغربی ممالک کو تنبیہ، سب نشانے پر ہیں، چُن چُن کر ماریں گےاسرائیل پر تاریخ کا بڑا سائبر حملہ: وزیراعظم، وزارت داخلہ اور وزارت صیہونی بہبود کی ویب سائٹیں ہیک اور تلفروس اور یوکرین کے مابین جلد امن معاہدہ طے پا جائے گا: روسی مذاکرات کاریوکرینی مہاجرین کی تعداد 50 لاکھ سے بڑھ گئی: اقوام متحدہفیس بک اور انسٹاگرام کی شدید متعصب پالیسی کا اعلان: روسی صدر اور فوج کیخلاف نفرت اور موت کے پیغامات شائع کرنے کی اجازت، نتیجتاً مغربی ممالک میں آرتھوڈاکس کلیساؤں اور روسی کاروباروں پر حملوں کی خبریںترکی کا بھی روس کے ساتھ مقامی پیسے میں تجارت کرنے کا اعلانمغرب کے دوہرے معیار: دنیا پر روس سے تجارت پر پابندیاں، برطانیہ سمیت بیشتر مغربی ممالک روس سے گیس و تیل کی خریداری جاری رکھیں گے

اردن میں شاہ عبداللہ کے خلاف بغاوت ناکام: شہزادے سمیت 20 افراد گرفتار، علاقائی و عالمی طاقتوں کا پوری حمایت کا اعلان

اردن میں سکیورٹی اداروں نے مبینہ بغاوت کو کچلتے ہوئے شاہ عبداللہ کے سوتیلے بھائی حمزہ بن حسین کو نظر بند اور دیگر شاہی خاندان کے افراد سمیت 20 افراد کو حراست میں لے لیا ہے۔ اعلیٰ حکومتی اہلکاروں کے مطابق کارروائی ہفتے کی رات کی گئی جس میں شاہی خاندان کے رکن شریف حسن بن زید اور باصم عواداللہ، سابق وزیر مالیات اور شاہی عدالت کے سربراہ سمیت متعدد اہم افراد کو گرفتار کر لیا گیا۔

ابتدائی طور پر شہزادہ حمزہ بن حسین کے بارے میں بھی سمجھا جا رہا تھا کہ وہ بھی سکیورٹی اداروں کی تحویل میں ہیں لیکن فوج کے سپہ سالار نے وضاحت میں بتایا ہے کہ شہزادے کو صرف اپنے گھر پر رہنے کی تلقین کی گئی ہے تاکہ باغیوں کو کنٹرول کیا جا سکے۔ سپہ سالار کا مزید کہنا تھا کہ اردن سے بڑھ کر کچھ نہیں، ملکی استحکام پر سمجھوتہ نہیں ہو گا۔

شہزادہ حمزہ کی جانب سے بی بی سی کو موصول ہونے والی ایک ویڈیو میں شہزادے کا کہنا ہے کہ انکی نجی سکیورٹی ہٹا دی گئی ہے، فون اور انٹرنیٹ سب بند ہے۔ ویڈیو پیغام میں شہزادہ حمزہ نے براہ راست شاہ عبداللہ پر تنقید نہیں کی البتہ ملکی بدحالی کا ذمہ دار بدعنوانی کو قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ اسی کے باعث اردنی شہریوں کی زندگیاں اور وقار داؤ پر لگا ہے۔ شہزادہ حمزہ نے مزید کہا ہے کہ ناقدین پر ہمیشہ سے بیرونی آلہ کار کا الزام لگتا رہا ہے لیکن وہ کسی اندرونی iا بیرونی سازش کا حصہ نہیں ہیں۔

واضح رہے کہ حکام نے تاحال کسی فرد پر کوئی باقائدہ الزام عائد نہیں کیا ہے، جبکہ سعودی عرب، مصر، لبنان، بحرین اور امریکہ کی جانب سے شاہ عبداللہ کی پوری حمایت کا اعلان سامنے آیا ہے۔

امریکی دفتر خارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ امریکہ اردنی حکومت کا اتحادی ہے، شاہ عبداللہ کو اکیلا نہیں چھوڑے گا۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us