ہفتہ, جنوری 15 Live
Shadow
سرخیاں
قازقستان ہنگامے: مشترکہ تحفظ تنظیم کے سربراہ کا صورتحال پر قابو کا اعلان، امن منصوبے کی تفصیلات پیش کر دیںبرطانوی پارلیمنٹ میں منشیات کا استعمال: اسپیکر کا سونگھنے والے کتے بھرتی کرنے کا عندیاامریکی سی آئی اے اہلکاروں کے ایک بار پھر کم عمر بچوں بچیوں کے ساتھ جنسی جرائم میں ملوث ہونے کا انکشافامریکہ کا مشرقی افریقہ میں تاریخ کے سب سے بڑے فوجی آپریشن کا اعلان: 1 ہزار سے زائد مزید کمانڈو تیارروسی صدر کی ثالثی: آزربائیجان اور آرمینیا کے مابین سرحدی جھڑپیں ختم، سرحدی حدود کے تعین پر اتفاق، جنگ سے متاثر آبادی اور دیگر انسانی حقوق کے تحفظ کی بھی یقین دہانینائیجیر: فرانسیسی فوج کی فائرنگ سے 2 شہری شہید، 16 زخمیامریکی فوج میں ہر 4 میں سے 1 عورت اور 5 میں سے 1 مرد جنسی زیادتی کا نشانہ بنتا ہے، بیشتر خود کشی کر لیتے، کورٹ مارشل کے خوف سے کوئی آواز نہیں اٹھاتا: سابقہ اہلکارروس کا غیر ملکی سماجی میڈیا کمپنیوں پر ملک میں کاروباری اندراج کے لیے دباؤ جاری: رواں سال کے آخر تک عمل نہ ہونے پر پابندی لگانے کا عندیاامریکہ ہائپر سونک ٹیکنالوجی میں چین اور روس سے بہت پیچھے ہے: امریکی جنرل تھامپسنامریکی تفریحی میڈیا صنعت کس عقیدے، نظریے اور مقصد کے تحت کام کرتی ہے؟

روم میں کورونا تالہ بندی کے خلاف پر تشدد احتجاج: دسیوں گرفتار، کئی افراد زخمی – ویڈیو

اٹلی کے دارالحکومت روم میں ڈھابوں اور شراب خانوں کے سینکڑوں مالکان نے کورونا پابندیوں کے خلاف پرتشدد احتجاج کیا ہے، پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے لاٹھی کا استعمال کیا جس پر شہریوں اور پولیس میں ہاتھا پائی ہو گئی۔ مقامی میڈیا کے مطابق اس دوران کچھ افراد کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں جبکہ پولیس نے دسیوں کو گرفتار کر لیا ہے۔

مظاہرین نے شہری آزادیوں اور کاروبار کھولنے کا مطالبہ کیا ہے۔ واضح رہے کہ یورپ کے بیشتر ممالک کی طرح اٹلی میں بھی شام کو مکمل تالہ بندی چل رہی ہے، جبکہ ریسٹورنٹوں کو دن کے وقت بھی گاہکوں کو کھانا پیش کرنے کی اجازت نہیں ہے۔

ڈھابوں اور شراب خانوں کے مالکان نے حکومت کے خلاف خوب نعرے لگائے اور فوری کاروبار کھولنے کا مطالبہ کیا۔ انکا کہنا تھا کہ اب انکے لیے کام کے بغیر جینا ناممکن ہے، وہ ہر قیمت پر اپنے کاروبار کھولیں گے۔ کچھ مالکان نے خود کو زنجیر باندھ کر احتجاج کیا، انکا کہنا تھا کہ وہ اب خود کو تو بند کر سکتے ہیں لیکن کاروبار نہیں۔

یاد رہے کہ اٹلی چند شدید متاثر ممالک میں سے ایک ہے، جہاں اب تک 37 لاکھ سے زائد افراد وائرس سے متاثر ہونے کی اطلاعات ہیں، اور اموات کی شرح بھی بہت زیادہ رہی۔ حکومتی اعدادوشمار کے مطابق1 لاکھ 11 ہزار 740 افراد کی اموات ہو چکی ہیں۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us