ہفتہ, April 9 Live
Shadow
سرخیاں
افغانستان میں امریکی فوج کی جانب سے تشدد کی تربیت کے لیے بلوچی قیدی کو استعمال کرنے کا انکشافہندوستانی میزائل کا مبینہ غلطی سے پاکستانی حدود میں گرنے کا واقعہ: امریکہ کی طرف سے متعصب جبکہ چین کی جانب سے نصیحت آمیز ردعملمیٹا آسٹریلوی سیاستدانوں کو سائبر حملوں اور جھوٹی خبروں سے بچنے کی تربیت دے گییوکرین: مغربی ممالک سے آئے 180 سے زائد جنگجو ہوائی حملے میں ہلاک، روس کی مغربی ممالک کو تنبیہ، سب نشانے پر ہیں، چُن چُن کر ماریں گےاسرائیل پر تاریخ کا بڑا سائبر حملہ: وزیراعظم، وزارت داخلہ اور وزارت صیہونی بہبود کی ویب سائٹیں ہیک اور تلفروس اور یوکرین کے مابین جلد امن معاہدہ طے پا جائے گا: روسی مذاکرات کاریوکرینی مہاجرین کی تعداد 50 لاکھ سے بڑھ گئی: اقوام متحدہفیس بک اور انسٹاگرام کی شدید متعصب پالیسی کا اعلان: روسی صدر اور فوج کیخلاف نفرت اور موت کے پیغامات شائع کرنے کی اجازت، نتیجتاً مغربی ممالک میں آرتھوڈاکس کلیساؤں اور روسی کاروباروں پر حملوں کی خبریںترکی کا بھی روس کے ساتھ مقامی پیسے میں تجارت کرنے کا اعلانمغرب کے دوہرے معیار: دنیا پر روس سے تجارت پر پابندیاں، برطانیہ سمیت بیشتر مغربی ممالک روس سے گیس و تیل کی خریداری جاری رکھیں گے

بحیرہ اسود میں امریکی بحری بیڑے کی آمد: روس کا جنگی مشقیں شروع کرنے کا اعلان، سرد جنگ کے روائیتی حریفوں میں جاری کشیدگی مزید بڑھ گئی

روس نے بحیرہ اسود میں جنگی مشق شروع کر دی ہے جس میں دشمن کے جہازوں کو ڈبونے کی مشق بھی کی گئی ہے۔ روسی مشقوں کا آغاز امریکہ کے علاقے میں بحری بیڑہ بھیجنے کے اعلان کے بعد کیا گیا ہے۔ مشقوں میں ایڈمرل ماکاروو بحری بیڑہ حصہ لے رہا ہے، اس کے علاوہ گریوونوو اور وشنی وولوچیک نامی میزائل بردار بحری جہاز بھی مشقوں میں حصہ لے رہے ہیں۔ بحری بیڑے میں جنگی جہاز اور ہیلی کاپٹر بھی شامل ہیں۔

روسی بحریہ کے ترجمان کے مطابق مشقوں میں سمندر کی سطح پر موجود دشمن کو نشانہ بنانے کی مشقیں کی جائیں گی، جس کو فضائیہ کا تعاون بھی حاصل ہو گا۔ بحریہ کے مطابق مشقوں میں بحیرہ گیلان میں تعینات فوجی بھی حصہ لیں گے۔

امریکی بحری بیڑے کے گشت کے اعلان کو یوکرین کی حمایت کی شکل میں دیکھا جا رہا ہے، جس پر روس پہلے ہی امریکہ کو تحفظات سے آگاہ کر چکا ہے۔

اگرچہ ترکی بھی امرکی بحری بیڑے کے گشت سے متعلق اطلاع سے آگاہ کر چکا ہے لیکن امریکی میڈیا نے گزشتہ روز دعویٰ کیا ہے کہ امریکہ کا بحیرہ اسود میں بحری بیڑہ بھیجنے کا کوئی ارادہ نہیں، روس صرف اس کا جواز بنا کر خطے میں عسکری سرگرمیوں کو بڑھا رہا ہے۔

خطے کی کشیدہ صورتحال میں روسی اعلیٰ عسکری عہدے دار بھی سرحدی علاقوں کا مسلسل دورہ کر رہے ہیں اور افواج کے جوابی حملے کی تیاریوں کا جائزہ لیا جا رہا ہے۔ عہدے داروں کا کہنا ہے کہ روسی سرگرمیاں نیٹو کے جواب میں ہیں۔ امریکہ یورپ میں افواج کی تعداد بڑھا رہا ہے اور خطے میں طاقت کا توازن بگاڑ رہا ہے۔

امریکہ کے روس کے جنوبی علاقوں خصوصاً بحیرہ اسود میں عسکری سرگرمیوں پر روس کا مؤقف ہے کہ خطے میں امریکہ کی موجودگی کا کوئی جواز نہیں بنتا، امریکہ صرف روس کو اشتعال دلا رہا ہے، اور اسکا کسی کو کوئی فائدہ نہیں ہو گا۔ امریکہ ہمارے اعصاب کا امتحان لینا چاہتا ہے، ضرور لے، وہ کسی سازش میں کامیاب نہیں ہو گا۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us