ہفتہ, April 9 Live
Shadow
سرخیاں
افغانستان میں امریکی فوج کی جانب سے تشدد کی تربیت کے لیے بلوچی قیدی کو استعمال کرنے کا انکشافہندوستانی میزائل کا مبینہ غلطی سے پاکستانی حدود میں گرنے کا واقعہ: امریکہ کی طرف سے متعصب جبکہ چین کی جانب سے نصیحت آمیز ردعملمیٹا آسٹریلوی سیاستدانوں کو سائبر حملوں اور جھوٹی خبروں سے بچنے کی تربیت دے گییوکرین: مغربی ممالک سے آئے 180 سے زائد جنگجو ہوائی حملے میں ہلاک، روس کی مغربی ممالک کو تنبیہ، سب نشانے پر ہیں، چُن چُن کر ماریں گےاسرائیل پر تاریخ کا بڑا سائبر حملہ: وزیراعظم، وزارت داخلہ اور وزارت صیہونی بہبود کی ویب سائٹیں ہیک اور تلفروس اور یوکرین کے مابین جلد امن معاہدہ طے پا جائے گا: روسی مذاکرات کاریوکرینی مہاجرین کی تعداد 50 لاکھ سے بڑھ گئی: اقوام متحدہفیس بک اور انسٹاگرام کی شدید متعصب پالیسی کا اعلان: روسی صدر اور فوج کیخلاف نفرت اور موت کے پیغامات شائع کرنے کی اجازت، نتیجتاً مغربی ممالک میں آرتھوڈاکس کلیساؤں اور روسی کاروباروں پر حملوں کی خبریںترکی کا بھی روس کے ساتھ مقامی پیسے میں تجارت کرنے کا اعلانمغرب کے دوہرے معیار: دنیا پر روس سے تجارت پر پابندیاں، برطانیہ سمیت بیشتر مغربی ممالک روس سے گیس و تیل کی خریداری جاری رکھیں گے

میزائل حملہ: دفاعی نظام کی ناکامی پر صیہونی انتظامیہ تلملا اٹھی، تحقیقات شروع

مقبوضہ فلسطین میں میزائل حملے کے بعد قابض صیہونی انتظامیہ نے تحقیقات شروع کر دی ہیں، انتظامیہ کو پریشانی لاحق ہے کہ دنیا کا جدید ترین خودکار دفاعی نظام کیسے ناکام ہو گیا اور میزائل کو روک نہ سکا۔

صیہونی میڈیا نے کل دعویٰ کیا تھا کہ رات دیمونہ کے علاقے میں شام سے میزائل حملے کیے گئے، حملے میں ایس اے-5 میزائل استعمال ہوئے جسے فضائی دفاعی نظام بھانپ نہ سکا اور میزائل مختلف مقامات پر گرے۔ صیہونی فوج کے مطابق حملے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا، البتہ اس نے دفاعی نظام کی کارکردگی پر بہت سے سوالات اٹھا دیے ہیں، قابض انتظامیہ کی پریشانی کی سب سے بڑی وجہ میزائل کا ملک کے انتہائی حساس مقام، یعنی جوہری مرکز کے قریب گرنا ہے۔

صیہونی فوج کے ترجمان کا کہنا ہے کہ انہیں نہیں لگتا کہ میزائل کا نشانہ خصوصی طور پر جوہری مرکز تھا، لیکن مرکز ہو بھی سکتا تھا۔

اطلاعات ہیں کہ اگرچہ حملے کے وقت دفاعی نظام ناکام رہا لیکن انتباہی نظام مکمل کام کرتا رہا اور اس نے فوری گھنٹی بجا کر فوج اور عوم کو جگا دیا ، جس کے باعث فوری امدادی ٹیمیں جائے وقوعہ پر پہنچ گئیں۔

عرب میڈیا کے مطابق قابض فوج کے ترجمان نے اس حوالے سے کوئی اطلاع نہیں دی کہ کونسا دفاعی نظام ناکام رہا۔

اطلاعات ہیں کہ قابض صیہونی فوج نے فوری شام میں حملے کے ماخذ پر بمباری کی جو مبینہ طور پر شامی فوجی چھاؤنیوں پر ہوئی، حملے میں درجنوں شامی فوجی کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔

یاد رہے کہ قابض صیہونی انتظامیہ اکثروبیشتر شام میں مختلف مقامات پر بمباری کرتی رہتی ہے، اور اس بارے میں کوئی اطلاع بھی نہیں دی جاتی، رواں ماہ کے آغاز میں بھی ایسے ہی ایک جارحانہ حملے میں متعدد شامی فوجی زخمی ہونے کی خبر سامنے آئی تھی۔

یاد رہے کہ قابض انتظامیہ کو اپنے فضائی دفاعی نظام پر بڑا ناز ہے اور وہ اسے حماس کے راکٹ حملوں کے خلاف بہترین دفاع مانتی ہے۔

مقامی میڈیا کا دعویٰ ہے کہ رواں سال کے آغاز میں فوج نے ایک عرب شہری کو دفاعی نظام کی جاسوسی کرتے پکڑا تھا، جس کے بارے میں خیال ہے کہ اس نے دفاعی نظام کی معلومات حماس کو دیں۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us