پیر, دسمبر 6 Live
Shadow
سرخیاں
امریکی سی آئی اے اہلکاروں کے ایک بار پھر کم عمر بچوں بچیوں کے ساتھ جنسی جرائم میں ملوث ہونے کا انکشافامریکہ کا مشرقی افریقہ میں تاریخ کے سب سے بڑے فوجی آپریشن کا اعلان: 1 ہزار سے زائد مزید کمانڈو تیارروسی صدر کی ثالثی: آزربائیجان اور آرمینیا کے مابین سرحدی جھڑپیں ختم، سرحدی حدود کے تعین پر اتفاق، جنگ سے متاثر آبادی اور دیگر انسانی حقوق کے تحفظ کی بھی یقین دہانینائیجیر: فرانسیسی فوج کی فائرنگ سے 2 شہری شہید، 16 زخمیامریکی فوج میں ہر 4 میں سے 1 عورت اور 5 میں سے 1 مرد جنسی زیادتی کا نشانہ بنتا ہے، بیشتر خود کشی کر لیتے، کورٹ مارشل کے خوف سے کوئی آواز نہیں اٹھاتا: سابقہ اہلکارروس کا غیر ملکی سماجی میڈیا کمپنیوں پر ملک میں کاروباری اندراج کے لیے دباؤ جاری: رواں سال کے آخر تک عمل نہ ہونے پر پابندی لگانے کا عندیاامریکہ ہائپر سونک ٹیکنالوجی میں چین اور روس سے بہت پیچھے ہے: امریکی جنرل تھامپسنامریکی تفریحی میڈیا صنعت کس عقیدے، نظریے اور مقصد کے تحت کام کرتی ہے؟چوالیس فیصد امریکی اولاد پیدا کرنے کی خواہش نہیں رکھتے: پیو سروے رپورٹچینی کمپنی ژپینگ نے جدید ترین برقی کار جی-9 متعارف کر دی: بیٹری کے معیار اور رفتار میں ٹیسلا کو بھی پیچھے چھوڑ دیا

کووڈ-19 کے نام پر حکومتیں جمہوری حقوق چھین رہی ہیں، بڑھتی طبقاتی تفریق بھی جمہوری معاشروں کے خطرہ بن رہی، طاقتور ممالک کی مداخلت اتنا بڑ امسئلہ نہیں: 53 ممالک میں کیے عوامی سروے کے نتائج

ایک نئے عوامی سروے میں جمہوری ممالک میں مقیم شہریوں کی اکثریت نے انسانی آزادیوں میں نمایاں کمی کے تحفظات کا اظہار کیا ہے۔ سروے کے مطابق 53٪ شہریوں کا کہنا ہے کہ کووڈ-19 کے نام پر حکومتیں انکی آزادیاں چھین رہی ہیں، اور وہ صورتحال سے غیرمطمئن ہیں۔

سروے 53 ممالک میں کیا گیا ہے جس میں 53 ہزار شہریوں سے بہار 2020 میں اور پھر بہار 2021 میں رائے لی گئی، 2020 میں 70 ٪ شہریوں نے کسی حد تک اطمینان کا اظہار کیا لیکن 2021 میں شہریوں کی اکثریت نے انتہائی بیزاری دکھائی۔

ماہرین نے عوامی رائے کو مدنظر رکھتے ہوئے حکومتوں کو فوری ضروری اقدامات کرنے کی تجویز دی ہے، ماہرین کا کہنا ہے کہ عوام کو آگاہی کے بعد انکی مرضی پر چھوڑنا چاہیے اور جمہوری روایات کو برقرار رکھنا ہی معاشرتی حق میں ہے۔

سروے کے دوسرے حصے میں پوچھے سوالات سے یہ بھی اخذ ہوا ہے کہ شہری بڑھتی ہوئی طبقاتی تفریق سے سخت پریشان ہیں، اور انکے خیال میں نچلے طبقے کی معاشی صورتحال بھی جمہوری معاشروں کے لیے بڑا خطرہ بنتی جا رہی ہے، جبکہ امریکہ سمیت دیگر طاقتور ممالک کی مداخلت کو کم بڑے مسئلے کے طور پر بیان کیا گیا ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us