ہفتہ, April 9 Live
Shadow
سرخیاں
افغانستان میں امریکی فوج کی جانب سے تشدد کی تربیت کے لیے بلوچی قیدی کو استعمال کرنے کا انکشافہندوستانی میزائل کا مبینہ غلطی سے پاکستانی حدود میں گرنے کا واقعہ: امریکہ کی طرف سے متعصب جبکہ چین کی جانب سے نصیحت آمیز ردعملمیٹا آسٹریلوی سیاستدانوں کو سائبر حملوں اور جھوٹی خبروں سے بچنے کی تربیت دے گییوکرین: مغربی ممالک سے آئے 180 سے زائد جنگجو ہوائی حملے میں ہلاک، روس کی مغربی ممالک کو تنبیہ، سب نشانے پر ہیں، چُن چُن کر ماریں گےاسرائیل پر تاریخ کا بڑا سائبر حملہ: وزیراعظم، وزارت داخلہ اور وزارت صیہونی بہبود کی ویب سائٹیں ہیک اور تلفروس اور یوکرین کے مابین جلد امن معاہدہ طے پا جائے گا: روسی مذاکرات کاریوکرینی مہاجرین کی تعداد 50 لاکھ سے بڑھ گئی: اقوام متحدہفیس بک اور انسٹاگرام کی شدید متعصب پالیسی کا اعلان: روسی صدر اور فوج کیخلاف نفرت اور موت کے پیغامات شائع کرنے کی اجازت، نتیجتاً مغربی ممالک میں آرتھوڈاکس کلیساؤں اور روسی کاروباروں پر حملوں کی خبریںترکی کا بھی روس کے ساتھ مقامی پیسے میں تجارت کرنے کا اعلانمغرب کے دوہرے معیار: دنیا پر روس سے تجارت پر پابندیاں، برطانیہ سمیت بیشتر مغربی ممالک روس سے گیس و تیل کی خریداری جاری رکھیں گے

بحرالکاہل میں چینی و روسی جنگی بحری مشقیں مکمل – ویڈیو

چینی اور روسی بحریہ نے بحرالکاہل میں مشترکہ جنگی مشقیں مکمل کر لی ہیں۔ مشقوں میں 3100 کلومیٹر کے دائرے کے تحفظ کی مشق کی گئی۔

روسی وزارت دفاع کے مطابق مشقوں کے دوران دونوں ممالک کے بحری بیڑے خلیج سوگاروسے گزرے جو جاپانی جزیرے ہونشو اور ہوکائیدو کے درمیان واقع ہے۔

مغربی ذرائع ابلاغ کی جانب سے متعدد سوالات اٹھائے جانے پر جاپانی وزارت دفاع کے ترجمان نے بیان جاری کیا ہے کہ چین اور روسی بحری جہاز بین الاقوامی حدود تک رہے اور ملکی حدود کی پامالی نہیں کی گئی۔

روسی ترجمان کے مطابق مشقوں میں جدید آبدوز شکن بحری جہازوں سمیت دونوں ممالک کے 10 سے زائد جہازوں نے شرکت کی۔

واضح رہے کہ گزشتہ کچھ عرصے سے بحرالکاہل میں چین اور امریکہ کے مابین کشیدگی میں اضافہ ہوا ہے۔ چین امریکہ پر خطے میں مداخلت اور عدم استحکام کی پالیسیوں کا الزام لگا رہا ہے جبکہ امریکہ مؤقف ہے کہ وہ چینی اثرورسوخ سے اتحادیوں کو محفوظ رکھنے کی کوشش میں ہے۔

امریکہ اس حوالے سے گزشتہ ماہ آسٹریلیا اور برطانیہ کے ساتھ مل کر ایک نئے عسکری اتحاد کا اعلان بھی کر چکا ہے، جو ہندوستان اور جاپان کے ساتھ ہوئے کچھ ماہ قبل کے اتھاد سے مختلف ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us