ہفتہ, April 9 Live
Shadow
سرخیاں
افغانستان میں امریکی فوج کی جانب سے تشدد کی تربیت کے لیے بلوچی قیدی کو استعمال کرنے کا انکشافہندوستانی میزائل کا مبینہ غلطی سے پاکستانی حدود میں گرنے کا واقعہ: امریکہ کی طرف سے متعصب جبکہ چین کی جانب سے نصیحت آمیز ردعملمیٹا آسٹریلوی سیاستدانوں کو سائبر حملوں اور جھوٹی خبروں سے بچنے کی تربیت دے گییوکرین: مغربی ممالک سے آئے 180 سے زائد جنگجو ہوائی حملے میں ہلاک، روس کی مغربی ممالک کو تنبیہ، سب نشانے پر ہیں، چُن چُن کر ماریں گےاسرائیل پر تاریخ کا بڑا سائبر حملہ: وزیراعظم، وزارت داخلہ اور وزارت صیہونی بہبود کی ویب سائٹیں ہیک اور تلفروس اور یوکرین کے مابین جلد امن معاہدہ طے پا جائے گا: روسی مذاکرات کاریوکرینی مہاجرین کی تعداد 50 لاکھ سے بڑھ گئی: اقوام متحدہفیس بک اور انسٹاگرام کی شدید متعصب پالیسی کا اعلان: روسی صدر اور فوج کیخلاف نفرت اور موت کے پیغامات شائع کرنے کی اجازت، نتیجتاً مغربی ممالک میں آرتھوڈاکس کلیساؤں اور روسی کاروباروں پر حملوں کی خبریںترکی کا بھی روس کے ساتھ مقامی پیسے میں تجارت کرنے کا اعلانمغرب کے دوہرے معیار: دنیا پر روس سے تجارت پر پابندیاں، برطانیہ سمیت بیشتر مغربی ممالک روس سے گیس و تیل کی خریداری جاری رکھیں گے

امریکہ ہائپر سونک ٹیکنالوجی میں چین اور روس سے بہت پیچھے ہے: امریکی جنرل تھامپسن

امریکی خلائی فوج کے اعلیٰ عہدے دار جنرل ڈیوڈ تھامپسن نے اعتراف کیا ہے کہ ہائپر سونک میزائل ٹیکنالوجی میں امریکہ روس اور چین سے بہت پیچھے رہ گیا ہے۔ جنرل تھامپسن کے مطابق اس کمی کی وجہ امریکی انتظامیہ اور اس پر ہونے والے اخراجات ہیں۔

خلائی فوج کی کارروائیوں کے نائب سربراہ کا کہنا تھا کہ اگر ہائپر سونک ٹیکنالوجی کی بات کی جائے تو امریکہ چین اور روس سے بہت پیچھے ہیں۔ بین الاقوامی ہیلی فیکس سکیورٹی فورم سے خطاب میں جنرل تھامپسن کا کہنا تھا کہ ہمیں اس کمی کو پورا کرنے کے لیے تیزی دکھانا ہوگی۔

تھامپسن کا کہنا تھا کہ یہ تمام مسائل امریکی بیوروکریسی اور سرمایہ کاری کے حوالے سے غلط ترجیحات کے باعث درپیش ہیں۔ ہمیں سستی ترک کر کے، جوش دکھانا ہو گا، شروع میں اس حوالے سے بہت سی غلطیاں، اور رسک بھی ہے لیکن یہ وقت کی اہم ضرورت ہے۔

واضح رہے کہ ہائپر سونک ٹیکنالوجی کو دفاع کے لیے انتہائی اہم اور حساس گردانا جارہا ہے، آواز کی رفتار سے بھی 5 گناء زیادہ تیز میزائل ریڈار اور دفاعی نظام وک بھی چکمہ دے سکتا ہے، جبکہ دوران پرواز سمت بدلنے کی صلاحیت اسے دشمن کے تمام منصوبے ناکام کرنے کی قوت سے بھی لیس کر دیتا ہے۔

امریکی اعلانات کے مطابق امریکہ 2023 تک دور تک وار کرنے والے ہائپر سونک میزائل تیار کرنے میں کامیاب ہو سکتا ہے، امریکی بحریہ کو یہ قوت دینے میں مزید 2 برس لگیں گے اور 2025 تک عملی طور پر امریکہ پوری طرح اس ٹیکنالوجی کا حامل ملک قرار پا سکتا ہے۔

روس نے گزشتہ ماہ ہائپر سونک کا تجربہ کر لیا ہے جبکہ چین نے رواں سال آگست میں اس میزائل کا تجربہ کیا ہے، جس نے امریکی انتظامیہ کی نیندیں حرام کی ہوئی ہیں۔ یاد رہے اس حوالے سے چین نے امریکی خبروں کی تردید کی ہے، لیکن امریکہ کو یقین ہے کہ چین نے اسی ٹیکنالوجی کا کامیاب تجربہ کیا ہے۔

امریکی جنرل نے چین کو خلائی ٹیکنالوجی میں امریکہ سے کئی گناء آگے ہونے اور مستقبل میں اس سے بھرپور فائدہ اٹھانے کی حیثیت میں ہونے کا اعتراف بھی کیا ہے۔ جنرل تھامپسن کا مزید کہنا تھا کہ اگر انکی ترقی کی رفتار یہی رہی تو امریکہ اس دوڑ میں بہت پیچھے رہ جائے گا۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us