جمعرات, اکتوبر 28 Live
Shadow
سرخیاں
جمناسٹک عالمی چیمپین مقابلے میں روسی کھلاڑی دینا آویرینا نے 15ویں بار سونے کا تمغہ جیت کر نیا عالمی ریکارڈ بنا دیا، بہن ارینا دوسرے نمبر پر – ویڈیویورپی یونین ہمارے سر پر بندوق نہ تانے، رویہ نہ بدلا تو بریگزٹ کی طرز پر پولیگزٹ ہو گا: پولینڈ وزیراعظمسابق سعودی جاسوس اہلکار سعد الجبری کا تہلکہ خیز انٹرویو: سعودی شہزادے محمد بن سلمان پر قتل کے منصوبے کا الزام، شہزادے کو بے رحم نفسیاتی مریض قرار دے دیاملکی سیاست میں مداخلت پر ترکی کا سخت ردعمل: 10 مغربی ممالک نے مداخلت سے اجتناب کا وضاحتی بیان جاری کر دیا، ترک صدر نے سفراء کو ملک بدر کرنے کا فیصلہ واپس لے لیاترکی کو ایف-35 منصوبے سے نکالنے اور رقم کی تلافی کے لیے نیٹو کی جانب سے ایف-16 طیاروں کو جدید بنانے کی پیشکش: وزیر دفاع کا تکنیکی کام شروع ہونے کا دعویٰ، امریکہ کا تبصرے سے انکارترک صدر ایردوعان کا اندرونی سیاست میں مداخلت پر 10 مغربی ممالک کے سفراء کو ناپسندیدہ قرار دینے کا فیصلہبحرالکاہل میں چینی و روسی جنگی بحری مشقیں مکمل – ویڈیونائجیریا: جیل حملے میں 800 قیدی فرار، 262 واپس گرفتار، 575 تاحال مفرورترکی: فسلطینی طلباء کی جاسوسی کرنے والا 15 رکنی صیہونی جاسوس گروہ گرفتار، تحقیقات جاریامریکی انتخابات میں غیر سرکاری تنظیموں کے اثرانداز ہونے کا انکشاف: فیس بک کے مالک اور دیگر ہم فکر افراد نے صرف 2 تنظیموں کو 42 کروڑ ڈالر کی خطیر رقم چندے میں دی، جس سے انتخابی عمل متاثر ہوا، تجزیاتی رپورٹ

امریکہ نے خلائی فوج کے پہلے دستے کی تعیناتی قطر میں کر دی

امریکہ نے اپنی خلائی فوج کی پہلی تعیناتی قطر میں کر دی ہے۔ ابتداء میں 20 اہلکاروں کے جتھے کو قطر کی العبید ہوائی چھاؤنی پہ تعینات کیا گیا ہے۔ امریکی خلائی فوج کے سرکاری ٹویٹر کھاتے سے شائع ہونے والی ایک ویڈیو میں اہلکاروں کو بڑے بڑے سیٹلائٹ انٹینا کے سامنے حلف اٹھاتے دکھایا گیا ہے۔

چھاؤنی میں خلائی فوج کے کمانڈر کرنل ٹوڈ بینسن کے مطابق قطر میں تعینات امریکی خلائی فوج کے اہلکار سیٹلائٹ چلانے، خلاء میں دشمن کی حرکات پر نظر رکھنے اور کسی قسم کے ٹکراؤ کو روکنے پہ کام کریں گے۔ انکا مزید کہنا تھا کہ امریکہ خلاء میں کسی قسم کے جارہانہ رویے پہ نظر رکھنا چاہتا ہے، ہمارے لیے اتحادیوں کے مفادات کی حفاظت اولین ترجیح ہے۔

روسی خبر رساں ادارے کے مطابق قطر میں امریکی خلائی اڈے پر جلد مزید اہلکار بھی تعینات کیے جاسکتے ہیں، جن کا مقصد ایران اور اسکے خلائی منصوبوں پر نظر رکھنا لگتا ہے۔

یاد رہے کہ ایران نے صرف ایک ماہ قبل خلاء میں خصوصی سیٹلائٹ بھیجا ہے۔ جس پر امریکہ نے اپنے ردعمل میں کہا تھا کہ ایران کا خلاء میں سیٹلائٹ بھیجنا اس بات کا ثبوت ہے کہ ایران میزائل پروگرام پرکام کر رہا ہے، اور اسکی یہ حرکات ہمسایہ ممالک کے لیے خطرناک ہیں۔

یاد رہے کہ امریکہ کی خلائی فوج کا قیام محض 9 ماہ قبل دسمبر 2019 میں ہوا ہے، جس کے لیے صدر ٹرمپ نے ساڑھے پندرہ ارب ڈالر کا بجٹ مختص کیا ہے، تاہم اس میں 2021 تک مزید اضافہ کیا جائے گا۔ خلائی فوج کے قیام پر صدر ٹرمپ کا کہنا تھا کہ خلاء میں آزادانہ سفر کو ممکن رکھنے کے لیے اس فوج کا قیام ناگزیر ہو گیا تھا۔

امریکہ کی جاب سے خلائی فوج کے قیام پر روس اور چین نے سخت تنقید کی تھی، دونوں ممالک کا کہنا ہے کہ زمین کے بعد خلاء کو بھی میدان جنگ بنانے والے اقدامات سے اجتناب کرنا چاہیے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us