اتوار, April 10 Live
Shadow
سرخیاں
افغانستان میں امریکی فوج کی جانب سے تشدد کی تربیت کے لیے بلوچی قیدی کو استعمال کرنے کا انکشافہندوستانی میزائل کا مبینہ غلطی سے پاکستانی حدود میں گرنے کا واقعہ: امریکہ کی طرف سے متعصب جبکہ چین کی جانب سے نصیحت آمیز ردعملمیٹا آسٹریلوی سیاستدانوں کو سائبر حملوں اور جھوٹی خبروں سے بچنے کی تربیت دے گییوکرین: مغربی ممالک سے آئے 180 سے زائد جنگجو ہوائی حملے میں ہلاک، روس کی مغربی ممالک کو تنبیہ، سب نشانے پر ہیں، چُن چُن کر ماریں گےاسرائیل پر تاریخ کا بڑا سائبر حملہ: وزیراعظم، وزارت داخلہ اور وزارت صیہونی بہبود کی ویب سائٹیں ہیک اور تلفروس اور یوکرین کے مابین جلد امن معاہدہ طے پا جائے گا: روسی مذاکرات کاریوکرینی مہاجرین کی تعداد 50 لاکھ سے بڑھ گئی: اقوام متحدہفیس بک اور انسٹاگرام کی شدید متعصب پالیسی کا اعلان: روسی صدر اور فوج کیخلاف نفرت اور موت کے پیغامات شائع کرنے کی اجازت، نتیجتاً مغربی ممالک میں آرتھوڈاکس کلیساؤں اور روسی کاروباروں پر حملوں کی خبریںترکی کا بھی روس کے ساتھ مقامی پیسے میں تجارت کرنے کا اعلانمغرب کے دوہرے معیار: دنیا پر روس سے تجارت پر پابندیاں، برطانیہ سمیت بیشتر مغربی ممالک روس سے گیس و تیل کی خریداری جاری رکھیں گے

امریکہ نے خلائی فوج کے پہلے دستے کی تعیناتی قطر میں کر دی

امریکہ نے اپنی خلائی فوج کی پہلی تعیناتی قطر میں کر دی ہے۔ ابتداء میں 20 اہلکاروں کے جتھے کو قطر کی العبید ہوائی چھاؤنی پہ تعینات کیا گیا ہے۔ امریکی خلائی فوج کے سرکاری ٹویٹر کھاتے سے شائع ہونے والی ایک ویڈیو میں اہلکاروں کو بڑے بڑے سیٹلائٹ انٹینا کے سامنے حلف اٹھاتے دکھایا گیا ہے۔

چھاؤنی میں خلائی فوج کے کمانڈر کرنل ٹوڈ بینسن کے مطابق قطر میں تعینات امریکی خلائی فوج کے اہلکار سیٹلائٹ چلانے، خلاء میں دشمن کی حرکات پر نظر رکھنے اور کسی قسم کے ٹکراؤ کو روکنے پہ کام کریں گے۔ انکا مزید کہنا تھا کہ امریکہ خلاء میں کسی قسم کے جارہانہ رویے پہ نظر رکھنا چاہتا ہے، ہمارے لیے اتحادیوں کے مفادات کی حفاظت اولین ترجیح ہے۔

روسی خبر رساں ادارے کے مطابق قطر میں امریکی خلائی اڈے پر جلد مزید اہلکار بھی تعینات کیے جاسکتے ہیں، جن کا مقصد ایران اور اسکے خلائی منصوبوں پر نظر رکھنا لگتا ہے۔

یاد رہے کہ ایران نے صرف ایک ماہ قبل خلاء میں خصوصی سیٹلائٹ بھیجا ہے۔ جس پر امریکہ نے اپنے ردعمل میں کہا تھا کہ ایران کا خلاء میں سیٹلائٹ بھیجنا اس بات کا ثبوت ہے کہ ایران میزائل پروگرام پرکام کر رہا ہے، اور اسکی یہ حرکات ہمسایہ ممالک کے لیے خطرناک ہیں۔

یاد رہے کہ امریکہ کی خلائی فوج کا قیام محض 9 ماہ قبل دسمبر 2019 میں ہوا ہے، جس کے لیے صدر ٹرمپ نے ساڑھے پندرہ ارب ڈالر کا بجٹ مختص کیا ہے، تاہم اس میں 2021 تک مزید اضافہ کیا جائے گا۔ خلائی فوج کے قیام پر صدر ٹرمپ کا کہنا تھا کہ خلاء میں آزادانہ سفر کو ممکن رکھنے کے لیے اس فوج کا قیام ناگزیر ہو گیا تھا۔

امریکہ کی جاب سے خلائی فوج کے قیام پر روس اور چین نے سخت تنقید کی تھی، دونوں ممالک کا کہنا ہے کہ زمین کے بعد خلاء کو بھی میدان جنگ بنانے والے اقدامات سے اجتناب کرنا چاہیے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us