ہفتہ, اکتوبر 24 Live
Shadow

امیر امیر تر: کورونا وباء کے دوران کھرب پتیوں کے اثاثہ جات میں 1/4 کا اضافہ، ماہرین کی سیاسی و عوامی ردعمل کی تنبیہ

دنیا کی دو بڑی مالیاتی اور تربیتی مشاورت کی کمپنیوں کی تازہ رپورٹ میں انکشاف ہوا ہے کہ کووڈ19 وباء کے دوران دنیا کے امیر ترین افراد مزید امیر ہوئے ہیں، اور انکے اثاثہ جات میں مجموعی طور پر ساڈھے 27 فیصد، یعنی ایک چوتھائی سے بھی زیادہ کا اضافہ ہوا ہے۔

تحقیقاتی رپورٹ کے مطابق وباء کے عروج کے دوران یعنی اپریل سے جولائی کے دوران یہ اضافہ 10 اعشاریہ 2 کھرب ڈالر کا تھا۔ رپورٹ کی تفصیل میں کہا گیا ہے کہ زیادہ فائدہ حصص بازار کے دوبارہ اٹھنے پر جوئے میں ہوا ہے۔

رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ یہ مالیاتی اضافہ 2017 کے آخرمیں مارکیٹ کے عروج پر ہونے کے دوران بنائے 8 اعشاریہ 9 کھرب ڈالر سے بھی زیادہ کا ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ارب پتیوں کی تعداد میں بھی معمولی سا اضافہ ہوا ہے اور اب یہ تعداد 2158 سے بڑھ کر 2189 ہوگئی ہے۔

یو بی ایس کے سربراہ کا کہنا ہے کہ ارب پتیوں نے بنیادی طور پر چھوٹی کمپنیوں کی کسمپرسی سے فائدہ اٹھایا، انکے حصص گرنے پر انہیں سستے میں خریدا اور اب معاشی سرگرمیوں کی واپسی پر وہ بیٹھے بیٹھے کھربوں کے اثاثہ جات کے مالک بن بیٹھے ہیں۔

رپورٹ میں تجزیہ دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ بیٹھے بیٹھے یوں کھرب پتی بننے کا عمل امیر زادوں کے خلاف سیاسی و عوامی ناراضگی کا سبب بنا سکتا ہے، اور ماہرین کا کہنا ہے کہ ان افراد کو بھی اس کا بخوبی اندازہ ہے، اور یہ بھی کہ صورتحال کسی شدید عوامی ردعمل کا شاخسانہ بھی بن سکتی ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں