اتوار, نومبر 28 Live
Shadow
سرخیاں
نائیجیر: فرانسیسی فوج کی فائرنگ سے 2 شہری شہید، 16 زخمیامریکی فوج میں ہر 4 میں سے 1 عورت اور 5 میں سے 1 مرد جنسی زیادتی کا نشانہ بنتا ہے، بیشتر خود کشی کر لیتے، کورٹ مارشل کے خوف سے کوئی آواز نہیں اٹھاتا: سابقہ اہلکارروس کا غیر ملکی سماجی میڈیا کمپنیوں پر ملک میں کاروباری اندراج کے لیے دباؤ جاری: رواں سال کے آخر تک عمل نہ ہونے پر پابندی لگانے کا عندیاامریکہ ہائپر سونک ٹیکنالوجی میں چین اور روس سے بہت پیچھے ہے: امریکی جنرل تھامپسنامریکی تفریحی میڈیا صنعت کس عقیدے، نظریے اور مقصد کے تحت کام کرتی ہے؟چوالیس فیصد امریکی اولاد پیدا کرنے کی خواہش نہیں رکھتے: پیو سروے رپورٹچینی کمپنی ژپینگ نے جدید ترین برقی کار جی-9 متعارف کر دی: بیٹری کے معیار اور رفتار میں ٹیسلا کو بھی پیچھے چھوڑ دیاماحولیاتی تحفظ کی مہم کیوں ناکام ہے؟: کینیڈی پروفیسر نے امیر مغربی ممالک کو زمہ دار ٹھہرا دیااتحادیوں کو اکیلا نہیں چھوڑا جائے گا، تحفظ ہر صورت یقینی بنائیں گے: امریکی وزیردفاعروس اس وقت آزاد دنیا کا قائد ہے: روسی پادری اعظم کا عیسائی گھرانوں کی امریکہ سے روس منتقلی پر تبصرہ

برطانوی حکومت کا تالہ بندی کے اعلان کی بریفنگ میں کووڈ19 کے غلط اعدادوشمار دینے کا اعتراف

برطانوی حکومت نے گزشتہ ہفتے خبروں میں ملک میں تالہ بندی کا اعلان کرنے کے ساتھ کووڈ19 کے مریضوں کی غلط تعداد بتانے کا اعتراف کیا ہے۔

اعتراف برطانوی محکمہ شماریات کی جانب سے سامنے آنے والی ایک ٹویٹ میں کیا گیا ہے جس میں محکمے نے حکومتی اعدادوشمار میں شفافیت پر سوال اٹھاتے ہوئے انہیں غلط قرار دیا ہے۔ ادارے کا کہنا ہے کہ کووڈ19 سے متعلق حکومتی اعدادوشمار میں شفافیت نہیں تھی، اور اس سے عوام میں شماریات پر اعتماد کو نقصان پہنچا ہے۔

برطانوی حکومت نے حالیہ تالہ بندی کا اعلان کرنے کے دن اعدادوشمار میں کہا تھا کہ اگر تالہ بندی نہ کی گئی تو دسمبر کی 8 تاریخ تک یومیہ اموات کی شرح 1400 تک بڑھ سکتی ہے، جبکہ اسکے اگلے ہی دن یہ تعداد کم کر کے 1000 کر دی گئی۔

معاملے پر وزیر اعظم بورس جانسن کے ترجمان کا کہنا ہے کہ بنیادی مقصد عوام کو آنے والے خطرے سے مطلع کرنا تھا، اور یہ بتانا تھا کہ دوسری لہر پہلی کی نسبت زیادہ خطرناک ہو گی۔ انکا مزید کہنا تھا کہ اعدادوشمار میں غلطی ہوئی اور اس کا ادراک ہوتے ہی اسے درست کر دیا گیا تاہم اسکے تجزیے میں کوئی غلطی نہ تھی۔

محکمہ شماریات نے حکومتی غلطی کی مذمت کی ہے اور اسے شماریات پر عوامی اعتماد کو نقصان پہنچانے کے مترادف قرار دیا ہے۔ ادارے نے اپنی تجویزات میں کہا ہے کہ حکومت بریفنگ میں اعدادوشمار کی تفصیل، اسے اکٹھا کرنے کے طریقے، تجزیے کی قسم اور اسکی تفصیل بھی عوام کے سامنے رکھے تاکہ غلطی کے امکان کو کم کرنے کے ساتھ ساتھ شماریات پر عوامی اعتماد کو تقویت ملے۔

واضح رہے کہ برطانیہ نے گزشتہ منگل سے ملک میں تالہ بندی کر رکھی ہے اور یہ 2 دسمبر تک برقرار رہے گی۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us