منگل, اکتوبر 19 Live
Shadow
سرخیاں
نیٹو کے 8 روسی مندوبین کو نکالنے کا ردعمل: روس نے سارا عملہ واپس بلانے اور ماسکو میں موجود نیٹو دفتر بند کرنے کا اعلان کر دیاشام اور عراق سے داعش کے دہشت گرد براستہ ایران افغانستان میں داخل ہو رہے ہیں، جنگجوؤں سے وسط ایشیائی ریاستوں میں عدم استحکام کا شدید خطرہ ہے: صدر پوتنآؤکس بین الاقوامی سیاست میں کشیدگی و عدم استحکام بڑھانے اور اسلحے کی نئی دوڑ کا باعث ہو گا: چین اور مشرقی ممالک کے خلاف مغرب کے نئے عسکری اتحاد پر روسی ردعملایف بی آئی نے خفیہ کارروائی میں جوہری آبدوز ٹیکنالوجی بیچتے دو فوجی انجینئر گرفتار کر لیےامریکہ مصنوعی ذہانت، سائبر سکیورٹی اور دیگر جدید ٹیکنالوجیوں میں چین سے 15/20 سال پیچھے ہے: پینٹاگون سافٹ ویئر شعبے کے حال ہی میں مستعفی ہونے والے سربراہ کا تہلکہ خیز انٹرویوروسی محققین کووڈ-19 کے خلاف دوا دریافت کرنے میں کامیاب: انسانوں پر تجربات شروعسابق افغان وزیردفاع کے بیٹے کی امریکہ میں 2 کروڑ ڈالر کے بنگلے کی خریداری: ذرائع ابلاغ پر خوب تنقیدہمارے پاس ثبوت ہیں کہ فرانسیسی فوج ہمارے ملک میں دہشت گردوں کو تربیت دے رہی ہے: مالی کے وزیراعظم مائیگا کا رشیا ٹوڈے کو انٹرویوعالمی قرضہ 300کھرب ڈالر کی حدود پار کر کے دنیا کی مجموعی پیداوار سے بھی 3 گناء زائد ہو گیا: معروف معاشی تحقیقی ادارے کی رپورٹ میں تنبیہامریکہ میں رواں برس کورونا وائرس سے مرنے والوں کی تعداد 2020 سے بھی بڑھ گئی: لبرل امریکی میڈیا کی خاموشی پر شہری نالاں، ریپبلک کا متعصب میڈیا مہم پر سوال

امریکی کانگریس میں دفاعی بل کی منظوری: بل میں روس اور ترکی پر معاشی پابندیاں، افغانستان سے مشروط انخلاء، اشرف غنی اور صیہونی انتظامیہ کی بھاری مالی مدد کی شقیں بھی شامل – صدر ٹرمپ کا بل ویٹو کرنے کا اعلان

امریکی نمائندگان کے بعد سینٹ نے بھی 740 ارب ڈالر کے متنازعہ دفاعی اخراجات کے بل کی منظوری دے دی ہے، صدر ٹرمپ نے بل کو ویٹو کرنے کا اعلان کر رکھا ہے تاہم کانگریس نے دو تہائی سے بل کو منظور کر کے صدر کو مخالفت کا پیغام دیا ہے۔

سینٹ سے قبل دفاعی بل کی نمائندگان کی طرف سے منظوری مل چکی ہے، سینٹ سے منظوری کے بعد بل صدر کو بھیجا جائے گا۔ جو پہلے ہی بل کو ویٹو کرنے کا اعلان کر چکے ہیں، صدر ٹرمپ کا مطالبہ ہے کہ سینٹ ابلاغیات کے قانون سے شق نمبر 230 کو ختم کرنے میں تعاون کرے تاکہ سماجی میڈیا پر آزادی رائے کو تحفظ دیا جا سکے۔

دفاعی اخراجات کے بل کی اہم تفصیلات میں امریکی فوجیوں کی تنخواؤں میں اضافے اور دنیا میں فوجی اڈوں کو قائم رکھنے کے علاوہ روس اور ترکی پر معاشی پابندیاں بھی عائد کی گئی ہیں۔ روس پر پابندیوں میں روسی گیس پائپ لائن منصوبے نارڈ سٹریم 2 میں شامل کمپنیوں اور افراد کو نشانہ بنایا گیا ہے جبکہ ترکی پر ایس-400 دفاعی منصوبے کی تنصیب کے ردعمل میں پابندیاں لگائی گئی ہیں۔ اس کے علاوہ بل میں افغانستان سے افواج کے انخلاء کے لیے سینٹ سے منظوری کی شق بھی بل کا حصہ ہے۔ بل میں مقبوضہ فلسطین پر قابض صیہونی انتظامیہ کی سالانہ 3 ارب ڈالر کی مالی امداد بھی شامل ہے۔

دفاعی اخراجات کے بل میں صدر ٹرمپ کی خارجہ خصوصاً فوجی انخلاء کی پالیسی کی مخالفت کے باعث بل متنازعہ ہو گیا ہے، جس کی وجہ سے صدر ٹرمپ نے اسے ویٹو کرنے کا اعلان کر رکھا ہے۔ صدر نے اپنے خصوصی ٹویٹ میں کہا ہے کہ انہیں امید ہے کہ انکے ویٹو کرنے پرریپبلک کانگریس نمائندگان بھی بل کی مخالفت میں ووٹ دیں گے۔

امریکی قانون کے مطابق صدر کے کسی بل کو ویٹو کرنے پر اسے منظوری کے لیے کانگریس سے دو تہائی اکثریت درکار ہوتی ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us