ہفتہ, April 9 Live
Shadow
سرخیاں
افغانستان میں امریکی فوج کی جانب سے تشدد کی تربیت کے لیے بلوچی قیدی کو استعمال کرنے کا انکشافہندوستانی میزائل کا مبینہ غلطی سے پاکستانی حدود میں گرنے کا واقعہ: امریکہ کی طرف سے متعصب جبکہ چین کی جانب سے نصیحت آمیز ردعملمیٹا آسٹریلوی سیاستدانوں کو سائبر حملوں اور جھوٹی خبروں سے بچنے کی تربیت دے گییوکرین: مغربی ممالک سے آئے 180 سے زائد جنگجو ہوائی حملے میں ہلاک، روس کی مغربی ممالک کو تنبیہ، سب نشانے پر ہیں، چُن چُن کر ماریں گےاسرائیل پر تاریخ کا بڑا سائبر حملہ: وزیراعظم، وزارت داخلہ اور وزارت صیہونی بہبود کی ویب سائٹیں ہیک اور تلفروس اور یوکرین کے مابین جلد امن معاہدہ طے پا جائے گا: روسی مذاکرات کاریوکرینی مہاجرین کی تعداد 50 لاکھ سے بڑھ گئی: اقوام متحدہفیس بک اور انسٹاگرام کی شدید متعصب پالیسی کا اعلان: روسی صدر اور فوج کیخلاف نفرت اور موت کے پیغامات شائع کرنے کی اجازت، نتیجتاً مغربی ممالک میں آرتھوڈاکس کلیساؤں اور روسی کاروباروں پر حملوں کی خبریںترکی کا بھی روس کے ساتھ مقامی پیسے میں تجارت کرنے کا اعلانمغرب کے دوہرے معیار: دنیا پر روس سے تجارت پر پابندیاں، برطانیہ سمیت بیشتر مغربی ممالک روس سے گیس و تیل کی خریداری جاری رکھیں گے

ژیاؤمی کا ہندوستان میں مزید 3 پیداواری مراکز قائم کرنے کا اعلان

معروف چینی ٹیکنالوجی کمپنی ژیاؤمی نے ہندوستان میں اپنے پیداواری ڈھانچے کو وسعت دینے کا فیصلہ کیا ہے۔ کمپنی نے اعلان کیا ہے کہ وہ جلد ہندوستان میں 3 نئے پیداواری مراکز قائم کریں گی، جہاں تیار ہونے والا مال پہلے مقامی مارکیٹ میں اور پھر بتدریج برآمد کیا جائے گا۔

ژیاؤمی نے ہندوستان کی دو مقامی کمپنیوں بی وائے ڈی اور ڈی بی جی کے ساتھ معاہدہ کیا ہے، کمپنی ان کے ساتھ مل کر ہندوستان میں مزید موبائل فون بنانا شروع کرے گی۔ ہریانہ میں تیار فیکٹری کو ڈی بی جی منظم کرے گی، اور تامل ناڈو میں تیار ہونے والا مرکز بھی آئندہ 3 ماہ میں پیداوار شروع کر دے گا۔ اس کے علاوہ ژیاؤمی تلانگانا میں ٹی وی بنانے کی فیکٹری لگائے گی، تاہم تاحال اسکی تاریخ نہیں بتائی گئی ہے۔

یاد رہے کہ ژیاؤمی ہندوستان کی سب سے مقبول موبائل فون اور ٹی وی کمپنی بن چکی ہے، اور اب اس کے ملک میں کئی پیداواری مراکز ہیں۔ کمپنی نے ہندوستان میں فاکس کون اور فلیکس کے ساتھ بھی مشترکہ منصوبے شروع کر رکھے ہیں۔ کمپنی کا منصوبہ ہے کہ ہندوستان کی ضرورت کا 99 فیصد مال ہندوستان میں ہی تیار کیا جائے۔

نئے مراکز کا اعلان کرتے ہوئے ژیاؤمی انٹرنیشنل کے نائب صدر منو جین کا کہنا تھا کہ وہ ہندوستان کو عالمی ٹیکنالوجی پیداوار کا مرکز بنانے میں اپنا چھوٹا سا کردار ادا کرنا چاہتے ہیں۔ انہیں امید ہے کہ ہندوستان مستقبل قریب میں ژیاؤمی کے لیے اہم ترین برآمدی مرکز بن جائے گا۔ انہوں نے میڈیا سے گفتگو میں بتایا کہ ژیاؤمی گزشتہ کچھ سالوں سے نیپال اور بنگلہ دیش کو برآمدات ہندوستانی فیکٹریوں سے ہی کر رہے ہیں۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us