ہفتہ, جنوری 15 Live
Shadow
سرخیاں
قازقستان ہنگامے: مشترکہ تحفظ تنظیم کے سربراہ کا صورتحال پر قابو کا اعلان، امن منصوبے کی تفصیلات پیش کر دیںبرطانوی پارلیمنٹ میں منشیات کا استعمال: اسپیکر کا سونگھنے والے کتے بھرتی کرنے کا عندیاامریکی سی آئی اے اہلکاروں کے ایک بار پھر کم عمر بچوں بچیوں کے ساتھ جنسی جرائم میں ملوث ہونے کا انکشافامریکہ کا مشرقی افریقہ میں تاریخ کے سب سے بڑے فوجی آپریشن کا اعلان: 1 ہزار سے زائد مزید کمانڈو تیارروسی صدر کی ثالثی: آزربائیجان اور آرمینیا کے مابین سرحدی جھڑپیں ختم، سرحدی حدود کے تعین پر اتفاق، جنگ سے متاثر آبادی اور دیگر انسانی حقوق کے تحفظ کی بھی یقین دہانینائیجیر: فرانسیسی فوج کی فائرنگ سے 2 شہری شہید، 16 زخمیامریکی فوج میں ہر 4 میں سے 1 عورت اور 5 میں سے 1 مرد جنسی زیادتی کا نشانہ بنتا ہے، بیشتر خود کشی کر لیتے، کورٹ مارشل کے خوف سے کوئی آواز نہیں اٹھاتا: سابقہ اہلکارروس کا غیر ملکی سماجی میڈیا کمپنیوں پر ملک میں کاروباری اندراج کے لیے دباؤ جاری: رواں سال کے آخر تک عمل نہ ہونے پر پابندی لگانے کا عندیاامریکہ ہائپر سونک ٹیکنالوجی میں چین اور روس سے بہت پیچھے ہے: امریکی جنرل تھامپسنامریکی تفریحی میڈیا صنعت کس عقیدے، نظریے اور مقصد کے تحت کام کرتی ہے؟

نیٹو کی یوکرین کے ساتھ عسکری سرگرمیاں: روس برہم، امریکہ کو تنبیہ و بات چیت کی دعوت

نیٹو کی جانب سے یوکرینی فوج کی روس کے خلاف جنگ کی تربیت اور مدد کی خبروں پر ماسکو کی طرف سے سخت ردعمل سامنے آیا ہے۔ حالات کو مزید کشیدگی سے بچانے کے لیے روس نے امریکہ کو بات چیت کے لیے مدعو کیا ہے۔ روسی نائب وزیر خارجہ سرگئی کیابکوف کا کہنا ہے کہ حکومت نے امریکہ کو دونباس کے علاقے میں نیٹو سرگرمیوں سے آگاہ کیا ہے اور تنبیہ کی ہے کہ امریکی پالیسی کے اثرات اچھے نہیں ہوں گے۔

یاد رہے کہ دو دن قبل امریکی دفتر خارجہ کے ترجمان نیڈپرائس نے روس کی جانب سے یوکرین کی سرحد پر عسکری نقل و حرکت بڑھانے پر تحفظات کا اظہار کیا تھا، اور کہا تھا کہ خطے میں کشیدگی کو کم کرنے کے لیے امریکہ روس کے ساتھ بات چیت کرنے کو تیار ہے۔ امریکی نے الزام لگایا تھا کہ روس یوکرین پر حملے اور جنگ کی تیاری کر رہا ہے۔

روس نے الزامات کی تردید کی ہے اور کہا ہے کہ فوج کو کوئی خصوصی ہدایات نہیں دی گئیں، تمام نقل وحرکت عمومی ہے۔ اور اس سے پہلے بھی نیٹو کی سرگرمیوں کے مطابق روسی فوج سرحد پر اپنی سرگرمیاں بڑھاتی رہتی ہے۔

واضح رہے کہ رواں ہفتے کے آغاز میں دونباس پر گفتگو کے دوران یوکرینی نمائندے نے روس سے جنگ کی صورت میں امریکی مدد کے وعدے کا دعویٰ کیا تھا۔ اس کے علاوہ نیٹو نے دفاع یورپ کے نام پر بڑی عسکری مشقوں کا آغاز کر دیا ہے، جس میں اطلاعات کے مطابق یوکرینی فوجیوں کو روسی فوج سے جنگ کی تربیت بھی دی جا رہی ہے۔ یاد رہے کہ یوکرین نیٹو کا رکن نہیں ہے۔

مشقوں میں 20 ہزار سے زائد امریکی فوجی حصہ لے رہے ہیں، اور یہ تعداد 21ویں صدی میں امریکہ کی کسی بھی جنگی مشق میں جھونکی فوجیوں کی سب سے بڑی تعداد ہے۔

نیٹو نے اپنی وضاحت میں کہا ہے کہ مشقوں کا مقصد بین الاقوامی سطح پر بڑی خطروں سے نمٹنے کی تیاری کرنا اور یورپ کے تحفظ کو یقینی بنانا ہے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us