ہفتہ, April 9 Live
Shadow
سرخیاں
افغانستان میں امریکی فوج کی جانب سے تشدد کی تربیت کے لیے بلوچی قیدی کو استعمال کرنے کا انکشافہندوستانی میزائل کا مبینہ غلطی سے پاکستانی حدود میں گرنے کا واقعہ: امریکہ کی طرف سے متعصب جبکہ چین کی جانب سے نصیحت آمیز ردعملمیٹا آسٹریلوی سیاستدانوں کو سائبر حملوں اور جھوٹی خبروں سے بچنے کی تربیت دے گییوکرین: مغربی ممالک سے آئے 180 سے زائد جنگجو ہوائی حملے میں ہلاک، روس کی مغربی ممالک کو تنبیہ، سب نشانے پر ہیں، چُن چُن کر ماریں گےاسرائیل پر تاریخ کا بڑا سائبر حملہ: وزیراعظم، وزارت داخلہ اور وزارت صیہونی بہبود کی ویب سائٹیں ہیک اور تلفروس اور یوکرین کے مابین جلد امن معاہدہ طے پا جائے گا: روسی مذاکرات کاریوکرینی مہاجرین کی تعداد 50 لاکھ سے بڑھ گئی: اقوام متحدہفیس بک اور انسٹاگرام کی شدید متعصب پالیسی کا اعلان: روسی صدر اور فوج کیخلاف نفرت اور موت کے پیغامات شائع کرنے کی اجازت، نتیجتاً مغربی ممالک میں آرتھوڈاکس کلیساؤں اور روسی کاروباروں پر حملوں کی خبریںترکی کا بھی روس کے ساتھ مقامی پیسے میں تجارت کرنے کا اعلانمغرب کے دوہرے معیار: دنیا پر روس سے تجارت پر پابندیاں، برطانیہ سمیت بیشتر مغربی ممالک روس سے گیس و تیل کی خریداری جاری رکھیں گے

فلسطین تازہ صورتحال: لبنان سے بھی قابض صیہونی انتظامیہ کے علاقوں میں راکٹ حملے شروع، غزہ میں قابض انتظامیہ نے باقائدہ حملہ کر دیا، جاں بحق ہونے والوں کی تعداد 100 سے تجاوز کر گئی

مقبوضہ فلسطین کے صیہونی آبادکاری کے علاقے میں غزہ کے علاوہ اب لبنان سے بھی راکٹ حملوں کا سلسلہ شروع ہو گیا ہے۔ قابض صیہونی ذرائع ابلاغ کے مطابق آج رات 3 راکٹ داغے گئے ہیں۔

قابض صیہونی انتظامیہ کے مطابق تینوں راکٹ بحیرہ روم میں گر گئے ہیں اور ان سے آبادی والے علاقے میں کسی قسم کا نقصان نہیں ہوا۔ تاہم لبنان سے راکٹ حملوں سے جنگ کے پھلنے کا خطرہ بڑھ گیا ہے خصوصاً جبکہ قابض انتظامیہ کے مسلح جتھوں نے غزہ میں باقائدہ زمینی حملہ کر دیا ہے۔

یاد رہے کہ ماضی میں بھی لبنان میں آباد فلسطینی گروہوں کی جانب سے صیہونی انتظامیہ کے خلاف حملے ہوتے رہے ہیں اور 2006 میں حزب اللہ کے خلاف صیہونی مسلح جتھے باقائدہ بڑا حملہ بھی کر چکے ہیں، جس میں بظاہر جانی و مالی طور پر لبنان کو کافی نقصان ہو اتھا لیکن دوسری طرف صیہونی جتھوں کو بھی کافی نقصان ہوا تھا۔

گزشتہ چند روز سے جاری حالیہ کشیدگی بیت المقدس میں فلسطینیوں سے زبردستی گھر چھیننے اور صیہوی آباد کاری کے خلاف جاری عوامی مزاحمت کے نتیجے میں شروع ہوئی ہے جس میں اب تک 27 بچوں اور 8 خواتین سمیت 100 سے زائد افراد جاں بحق ہو چکے ہیں۔ حملوں میں حماس کے ایک اہم رہنما کے مارے جانے کی بھی اطلاعات ہے۔

قابض صیہونی انتظامیہ کے مطابق حماس نے اب تک 1500 سے زائد راکٹ برسائے ہیں تاہم اس میں ہونے والی ہلاکتوں کا درست بتایا نہیں جا رہا، مختلف ذرائع کے مطابق ایک ہندوستانی سمیت 10 سے زائد صیہونی مارے گئے ہیں۔

قابض صیہونی فضائی نے خصوصی طور پر غزہ میں اب تک 650 سے زائد مقامات کو نشانہ بنایا ہے۔

دوسری طرف کشیدگی میں اضافے کے باعث صیہونی تنظیمیں نہتے عرب شہریوں پر بھی حملے کر رہی ہیں۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us