پیر, اکتوبر 25 Live
Shadow
سرخیاں
ترک صدر ایردوعان کا اندرونی سیاست میں مداخلت پر 10 مغربی ممالک کے سفراء کو ناپسندیدہ قرار دینے کا فیصلہبحرالکاہل میں چینی و روسی جنگی بحری مشقیں مکمل – ویڈیونائجیریا: جیل حملے میں 800 قیدی فرار، 262 واپس گرفتار، 575 تاحال مفرورترکی: فسلطینی طلباء کی جاسوسی کرنے والا 15 رکنی صیہونی جاسوس گروہ گرفتار، تحقیقات جاریامریکی انتخابات میں غیر سرکاری تنظیموں کے اثرانداز ہونے کا انکشاف: فیس بک کے مالک اور دیگر ہم فکر افراد نے صرف 2 تنظیموں کو 42 کروڑ ڈالر کی خطیر رقم چندے میں دی، جس سے انتخابی عمل متاثر ہوا، تجزیاتی رپورٹبنگلہ دیش: قرآن کی توہین پر شروع ہونے والے فسادات کنٹرول سے باہر، حالات انتہائی کشیدہ، 9 افراد ہلاک، 71 مقدمے درج، 450 افراد گرفتار، حکومت کا ریاست کو دوبارہ سیکولر بنانے پر غورنیٹو کے 8 روسی مندوبین کو نکالنے کا ردعمل: روس نے سارا عملہ واپس بلانے اور ماسکو میں موجود نیٹو دفتر بند کرنے کا اعلان کر دیاشام اور عراق سے داعش کے دہشت گرد براستہ ایران افغانستان میں داخل ہو رہے ہیں، جنگجوؤں سے وسط ایشیائی ریاستوں میں عدم استحکام کا شدید خطرہ ہے: صدر پوتنآؤکس بین الاقوامی سیاست میں کشیدگی و عدم استحکام بڑھانے اور اسلحے کی نئی دوڑ کا باعث ہو گا: چین اور مشرقی ممالک کے خلاف مغرب کے نئے عسکری اتحاد پر روسی ردعملایف بی آئی نے خفیہ کارروائی میں جوہری آبدوز ٹیکنالوجی بیچتے دو فوجی انجینئر گرفتار کر لیے

ٹویٹر کو نائیجیریا میں دوبارہ بحالی کیلئے مقامی ابلاغی اداروں کی طرح لائسنس لینا ہو گا، اندراج کروانا ہو گا: افریقی ملک کا امریکی سماجی میڈیا کمپنی کو دو ٹوک جواب، صدر ٹرمپ کی جانب سے پابندی پر ستائش کا بیان

 نائیجیریا نے ٹویٹر پر عائد پابندی ختم کرنے کے لیے ویب سائٹ کو ایک مقامی کمپنی کے طور پر اندراج کروانے کی شرط عائد کردی ہے۔جس کے لیے امریکی ویب سائٹ کو اب نائیجیریا میں باقائدہ لائسنس حاصل کرنا ہو گا، اور کمپنی مکمل طور پر مقامی قوانین کی پابند ہو جائےگی۔

واضح رہے کہ نائیجیریا نے کچھ دن قبل ٹویٹر پر صدر محمدبخاری کی ٹویٹ تلف کرنے پر پابندی لگا دی تھی۔ کمپنی نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی طرح صدر بخاری پر بھی تشدد کو ابھارنے کا الزام لگایا تھا۔ صدر بخاری نے ملک میں انتشار پھیلانے اور علیحدگی کی تحریک چلانے والوں کو للکارتے ہوئے سزا دینے کی دھمکی دی تھی، جس پر سماجی میڈیا ویب سائٹ نے صدر کی ٹویٹ تلف کردی تھی۔ ایک ریاستی عہدے دار کی آواز بندی کرنے پر صدر بخاری نے ویب سائٹ پر ملک میں پابندی لگا دی اور اب کمپنی کے اعلیٰ عہدے داروں کے صدر سے ملاقات میں ویب سائٹ کو دوبارہ بحال کرنے کی گزارش پر صدر نے ویب سائٹ پر ملکی قوانین کے مطابق بطور کمپنی رجسٹر ہونے اور لائسنس حاصل کرنے کی شرط رکھی ہے۔

حکومت نے وضاحت جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ ٹویٹر سب سے پہلے نائیجیریا میں بطور کمپنی اپنا نادراج کروائے اور دیگر مقامی ابلاغی اداروں کی طرح قومی کمیشن سے اپنا لائسنس حاصل کرے، پھر اسے ملک میں کام کرنے کی اجازت دی جائے گی۔ حکومت نے وضاحتی بیان میں مزید کہا ہے کہ نائیجیریا میں ٹویٹر کو وہ افراد اور گروہ استعمال کررہے ہیں جو ملک میں تشدد اور علحیدگی پسندگی کو ہوا دیتے ہیں، حکومت نے ٹویٹر پر گزشتہ سال پولیس کے خلاف احتجاج کرنے والوں کو مالی اعانت دینے کا الزام بھی عائد کیا ہے۔

سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے نائیجیریا کے صدر کی طرف سے ٹویٹر پر پابندی عائد کرنے کے فیصلے کو سراہا ہے، اور سماجی میڈیا ویب سائٹ کے آزادی اظہار کے خلاف رویے پر دیگر ممالک کو بھی ایسا ہی کرنے کی رغبت دلائی ہے۔ صدر ٹرمپ نے اپنے بیان میں مزید کہا کہ انہیں بھی اپنے دور اقتدار میں ایسا ہی کرنا چاہیے تھا، انہیں افسوس ہے کہ وہ ایسا نہ کرسکے۔ صدر ٹرمپ کے بیان میں سے تاثر آیا ہے کہ جیسےوہ صدر بخاری کو خود سے زیادہ بہادر کہہ رہے ہوں، جو ٹویٹر کے خلاف وہ کر گئے جو وہ بطور امریکی صدر بھی نہ کر سکے۔

دوست و احباب کو تجویز کریں

تبصرہ کریں

Contact Us