بدھ, اکتوبر 28 Live
Shadow

Author: نگہت راشد

کشمیر اور وقت کی ضرورت

کشمیر اور وقت کی ضرورت

علمی تحریریں
بانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح نے فرمایا ہے کہ کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے جب تک ہم اپنی شہ رگ کو ظالموں کے پنجے سے نہیں چھڑاتے اس وقت تک ہمارا پاکستان وہ پاکستان نہیں ہے جس کا خواب مصور پاکستان علامہ اقبال نے دیکھا تھا اور اس خواب کو نقشہ دنیا پر کندہ کرنے کے لئے قائداعظم نے شب وروز انتھک محنت کی تھی کشمیر کو اسی لئے پاکستان کی شہ رگ کہا گیا ہے کشمیر کے بغیر پاکستان نامکمل ہے اس حقیقت کی آگہی ہر محب وطن اور ذی شعور پاکستانی کو ہےیہی وجہ ہے کہ حکومت پاکستان اور پاکستانی عوام نے کشمیر کی تحریک آزادی میں کشمیری عوام کا نہ صرف اخلاقی طور پر ساتھ دیا ہے بلکہ عملی طور پر بھی ان کی حمایت کا مظاہرہ کیا ہے کشمیر کی جدوجہد آزادی نے جو بھی رخ اختیار کیا ہے پاکستانی حکومت اور عوام نے اس کا بھرپور ساتھ دیا ہے اور کشمیری عوام کے ہم قدم رہے ہیںحکومت پاکستان کا ہمیشہ سے یہی موقف ...
فلم ‘سلام مدرسہ ہندوستانی’ اردو اور عربی سمیت کئی زبانوں میں ریلیز ہو گی

فلم ‘سلام مدرسہ ہندوستانی’ اردو اور عربی سمیت کئی زبانوں میں ریلیز ہو گی

تفریح
فلم * سلام مدرسہ ہندوستانی * ، اسکول جانے والے 2 بچوں پر مبنی ایک کہانی ہے جو ایک پھٹے پرانے کپڑے اٹھانے والے ایک لڑکے کے ساتھ دوستی کرتی ہے اور لڑکا چاہتا ہے کہ وہ اسلامی اسکول میں تعلیم حاصل کرے۔ فلم میں انسانیت ، دوستی ، مہربانی اور تعلیم کی اھمیت کی عکاسی گئی ہے۔ فلم میں سونیا مجید کو بطور مرکزی گلوکار اور پلے بیک گلوکارہ کے طور پرمتعارف کرایا گیا ہے۔ سونیا مجید عالمی امن کی سفیر ، گلوبل وائس کی سفیر ، عالمی خیر سگالی کی سفیر اور ورلڈ یوتھ فورم ، یو اے ای کے کنٹری ڈائریکٹر ہیں۔ فلم کے ذریعے ، ایک اسلامی اسکول کا اچھا اور مثبت رخ دکھایا گیا ہے۔ فی الحال ، فلم پوسٹ پروڈکشن کے آخری مراحل میں ہے اور یہ فرائض سنیل حسن اور ہشام مدائی انجام دے رہے ہیں اور جلد ہی یہ فلم عربی اور دیگر زبانوں میں اور دنیا بھر کے بڑے فلمی میلوں میں اور سینما گھروں کو نمائش کے لئے تیار کی جائے گی۔ فلم ...
یہ لندن کیسا لندن ہے

یہ لندن کیسا لندن ہے

Uncategorized, علمی تحریریں
تین بادشاہ آپس میں بہت گہرے دوست تھے وہ سال کا کچھ وقت اکٹھے گزارا کرتے تھے ایک دفعہ انہوں نے فیصلہ کیا کہ اگلی بار ملنے سے پہلے وہ اپنی اپنی ریاست کو خوبصورت بنائیں گے اور پھر فیصلہ ہوگا کہ کس کی ریاست زیادہ خوبصورت ہے ان تینوں دوستوں نے اپنی اپنی ریاست کو خوبصورت بنانے کے لئے سارا سال سخت محنت کی اور جب ملاقات کا وقت آیا تو تینوں ممالک کے بادشاہوں نےمنصفین کا انتخاب کیا اور ان کو اپنے ساتھ تینوں ریاستوں کا دورہ کرنے کی درخواست کی تاکہ وہ اس بات کا فیصلہ کرسکیں کہ کس بادشاہ کی ریاست زیادہ خوبصورت ہے سب سے پہلے جس ریاست کا دورہ کیا گیا اس کی تمام عمارتوں کو نہایت خوبصورت انداز میں میں سجایا گیا تھا ان عمارتوں کی تزئین و آرائش بھی عمدہ انداز میں کروائی گئی تھی پورے علاقے میں کوئی بھی ایسی عمارت نہ تھی جو ٹوٹی پھوٹی اور بدنما ہو جج حضرات بہت متاثر ہوئے کیونکہ عمارتیں بہت خوبصورت تھی...