بدھ, جنوری 27 Live
Shadow

سیاست

اٹلی میں معاشی و سماجی بدحالی: اتحادی ساتھ چھوڑ گئے، وزیراعظم مستعفی، اعتماد کے ووٹ کے لیے نئے اتحادیوں کی تلاش شروع

اٹلی میں معاشی و سماجی بدحالی: اتحادی ساتھ چھوڑ گئے، وزیراعظم مستعفی، اعتماد کے ووٹ کے لیے نئے اتحادیوں کی تلاش شروع

سیاست
اٹلی کے وزیراعظم جیہسیپی کونتے مستعفی ہو گئے ہیں، صدارتی وضاحت کے مطابق وزیراعظم نے استعفیٰ کابینہ ارکان کے مشورے سے دیا اور اب وہ نئے اتحادیو ں کے ساتھ دوبارہ حکومت بنانے کی کوشش کریں گے۔اقدام کو وزیراعظم کی جانب سے اقتدار پر قائم رہنے کے لیے محفوظ ترین حکمت عملی قراردیا جا رہا ہے۔ صورتحال ایک اتحادی جماعت کے حکومت سے علیحدگی کے اعلان کے باعث پیش آئی جس کے باعث کونتے حکومت کے پاس اسمبلی میں مطلوبہ اکثریت نہ رہی اور وہ اعتماد کا ووٹ لینے کے قابل نہ رہے۔اب وزیراعظم کونتے دیگر جماعتوں کے ساتھ اتحاد بنا کر صدر سے دوبارہ انکی توثیق کی درخواست کریں گے۔ اگر کونتے اتحادی ڈھونڈنے میں کامیاب رہتے ہیں تو گزشتہ تین سالوں میں یہ انکی تیسری انتظامیہ ہو گی۔ کونتے کو اسمبلی میں موجود معروف جماعتوں کا اعتماد بھی حاصل نہیں ہے، اور متعدد جماعتوں کی اہم قائدین اتحاد میں شمولیت کی نفی کر چکے ہیں، جن ...
ہندوستان میں کسان احتجاج شدت اختیار کر گیا: مشتعل مظاہرین لال قلعے پر چڑھ دوڑے، خالصتان کا جھنڈا قومی عمارت پر لہرا دیا

ہندوستان میں کسان احتجاج شدت اختیار کر گیا: مشتعل مظاہرین لال قلعے پر چڑھ دوڑے، خالصتان کا جھنڈا قومی عمارت پر لہرا دیا

سیاست
ہندوستان میں پنجابی کسانوں کا نئی زراعت پالیسیوں کے خلاف احتجاج شدت اختیار کر گیا ہے۔ احتجاج میں اب دیگرعلاقوں کے کسانوں نے بھی شمولیت اختیار کر لی ہے۔ آج ہندوستانی یوم جمہوریہ پر مشتعل مظاہرین نے دارلحکومت دہلی میں لال قلعے پر دھاوا بول دیا جس پر دنیا بھر میں خبر کو جگہ ملی۔https://twitter.com/saurabh3vedi/status/1353962118416986112?s=20آج کسانوں نے ٹینکوں کے مقابلے میں ٹریکٹر مارچ منعقد کیا اور روائیتی اسلحے سے لیس ہو کر دہلی داخل ہوئے۔ راستے میں پولیس اور خصوصی افواج نے رستہ روکنے کی بہت کوشش کی اور گولی بھی چلی لیکن مشتعل مظاہرین لال قلعے پر چڑھ دوڑے۔مقامی میڈیا کے مطابق آج دہلی میں انٹرنیٹ سروس بند تھی جس کے باعث صورتحال کی فوری اطلاعات عالمی میڈیا پر نہ آسکیں، لیکن شام کو ہندوستان کی پولیس اور فوج کا تماشہ پوری دنیا کے ابلاغیات پر دیکھا گیا۔یاد رہے کہ کسانوں کا اح...
امریکہ میں لبرل نظریات سے متاثر ایک اور بچے نے باپ کو کیپیٹل ہل پر دھاوا بولنے پر گرفتار کروا دیا: سماجی میڈیا پر صارفین کی کڑی تنقید، تعداد 100 سے زائد ہو گئی

امریکہ میں لبرل نظریات سے متاثر ایک اور بچے نے باپ کو کیپیٹل ہل پر دھاوا بولنے پر گرفتار کروا دیا: سماجی میڈیا پر صارفین کی کڑی تنقید، تعداد 100 سے زائد ہو گئی

سیاست
امریکی ریاست ٹیکساس کے ایک نوجوان نے لبرل نظریات سے متاثر ہو کر اور پیسوں کے لالچ میں اپنے باپ کو ایف بی آئی کے ہاتھوں گرفتار کروا دیا ہے۔ جیکسن رفیٹ نامی نوجوان نے کیپیٹل ہل پر دھاوا بولنے والے افراد میں شامل ہونے پر اپنے سگے باپ کا نام امریکی تحقیقاتی ادارے کو دیا جس پر سکیورٹی ایجنسی اسے گرفتار کر کے لے گئی۔اطلاعات کے مطابق جیکسن لبرل نظریات سے متاثر ہے اور اور اس نے ایسا پیسوں کے لالچ میں کیا، جس سے وہ اپنے کالج کی فیس ادا کرنا چاہتا ہے۔جیکسن نے یہ دعویٰ بھی کیا ہے کہ اسکے باپ نے اسے دھمکی دی تھی کہ اگر اس نے ایف بی آئی کو اطلاع دی تو وہ اسے غدار سمجھے گا اور غدار کی سزا صرف موت ہوتی ہے۔ تاہم بیٹے نے باپ کا شکایت کر دی اور پولیس اسے گرفتار کر کے لے گئی۔پولیس کے مطابق جیکسن نے اپنے 48 سالہ باپ کے بارے میں کہا ہے کہ اس نے ڈیموکریٹ جماعت پر کسی بڑے حملے کا منصوبہ بھی بنا رکھا...
امریکی صدر جوبائیڈن نے ہجڑوں کی فوج میں بھرتی دوبارہ کھول دی

امریکی صدر جوبائیڈن نے ہجڑوں کی فوج میں بھرتی دوبارہ کھول دی

سیاست
امریکی صدر جو بائیڈن نے ہجڑوں کے لیے فوج میں بھرتی کی سہولت کو دوبارہ بحال کر دیا ہے۔ سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے قانون کے خلاف اپنے حکم نامے پر دستخط کرتے ہوئے جوبائیڈں کا کہنا تھا کہ فوج میں خدمات کے لیے اہل تمام امریکی اس میں شمولیت اختیار کر سکتے ہیں۔جوبائیڈن کا خیال ہے کہ صنفی فرق فوج میں ملازمت کے لیے رکاوٹ نہیں بن سکتا، امریکہ کی مظبوطی اسکی اقدار میں ہے اور امریکی اقدار میں صنفی تفریق ناجائز ہے۔امریکی وزیر دفاع ریٹائرڈ جنرل لالڈ آسٹن نے بھی حکنامے کی تعریف کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکی فوج میں شمولیت کے لیے مقرر معیار کو پورا کرنے والا ہر امریکی اس میں بھرتی ہو سکتا ہے، صنفی تفریق کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔یاد رہے کہ سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپریل 2019 میں ہجڑوں کی فوج میں بھرتی پر پابندی لگائی تھی، اور پابندی کو فوج کی پیشہ ور صلاحیتوں کے لیے ضروری قرار دیا تھا۔ تاہم پالیسی ...
سکاٹ لینڈ میں خودمختاری کی تحریک زور پکڑنے لگی، نمائندہ وزیر نیکولا سٹرجن نے رواں سال انتخابات جیت کر ریفرنڈم کا اعلان کر دیا

سکاٹ لینڈ میں خودمختاری کی تحریک زور پکڑنے لگی، نمائندہ وزیر نیکولا سٹرجن نے رواں سال انتخابات جیت کر ریفرنڈم کا اعلان کر دیا

سیاست
برطانیہ میں سکاٹ لینڈ کی نمائندہ وزیر نیکولا سٹرجن نے سکاٹ لینڈ کی خودمختاری کے لیے ایک بار پھر ریفرنڈم کے اسرار کو دوہرایا ہے اور کہا ہے کہ انکی جماعت مئی میں عام انتخابات جیت کر خودمختاری کے فیصلے کے لیے عوام کے پاس جائے گی، جبکہ برطانوی وزیراعظم بورس جانسن نے زور دیا ہے کہ آئندہ ریفرنڈم 2055 سے قبل نہیں ہونا چاہیے۔نیکولا سٹرجننے بی بی سی سے گفتگو میں وزیراعظم کو ڈرپوک چوہا قرار دیتے ہوئے کہا بورس جانسن جمہوریت سے ڈرتے ہیں، اس لیے عوامی رائے کو نظرانداز کرتے ہوئے کم از کم 50 سال کا وقت مانگ رہے ہیں۔یاد رہے کہ سکاٹ لینڈ میں خودمختاری/علیحدگی کے لیے 2014 میں ریفرنڈم ہوا تھا جس میں 55 فیصد شہریوں نے علیحدگی کو ناپسند کیا تھا تاہم یورپی اتحاد سے الگ ہونے کے بعد سکاٹ لینڈ میں علیحدگی کی تحریک زور پکڑ گئی ہے۔ اور عوامی سروے میں بھی علیحدگی کے حامیوں میں اضافے کے اشارے ملے ہیں۔...
جیسے ریپبلکن ٹرمپ کی شکست ماننے سے قاصر ہیں ایسے ہی لبرل امریکہ کو دہشت گرد ریاست قبول کرنے سے انکاری ہیں: پروفیسر چومسکی کی رشیا ٹوڈے سے مکمل گفتگو نشر

جیسے ریپبلکن ٹرمپ کی شکست ماننے سے قاصر ہیں ایسے ہی لبرل امریکہ کو دہشت گرد ریاست قبول کرنے سے انکاری ہیں: پروفیسر چومسکی کی رشیا ٹوڈے سے مکمل گفتگو نشر

سیاست
رشیا ٹوڈے نے معروف امریکی مفکر اور ناقد نوم چومسکی کا مکمل انٹرویو نشر کر دیا ہے۔ روسی نشریاتی ادارے سے گفتگو میں چومسکی کا کہنا تھا کہ اس وقت امریکی معاشرے میں حقیقت سے نظریں چُرانے کا رویہ اپنے عروج پر ہے، لبرل اشرافیہ بشمول گروہ کے نظریاتی رہنما خیالی دنیا میں رہ رہے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ پوری دنیا میں دہشت گردی میں اضافہ ہوا ہے۔ لیکن امریکی لبرل یہ ماننے کو تیار ہی نہیں کہ امریکہ ایک دہشت گرد ریاست ہے، انکا رویہ بالکل ایسا ہے جیسے روایت پسند ریپبلک جماعت انتخابات میں صدر ٹرمپ کی شکست کو تسلیم کرنے سے انکاری ہیں۔https://youtu.be/Nv4MMbpPksQڈاکٹر چومسکی کا کہنا ہے کہ امریکہ شروع سے ہی ایک دہشت گرد ریاست رہی ہے، اس کے خلاف اٹھنے والی مزاحمت کو کچلنے کا آغاز صدر ریگن نے وسط امریکی اور جنوبی افریقہ سے کیا تھا، بلکہ یہ صدر ریگن کی خارجہ پالیسی تھی۔ 2008 تک نیلسن منڈیلا امریکہ کے لیے...
کیپیٹل ہل پر دھاوا بولنے والے ایک شہری پر رکن اسمبلی الیگزینڈریا اوکیسیو کورٹز کے قتل کی کوشش کا الزام بھی دھر دیا گیا

کیپیٹل ہل پر دھاوا بولنے والے ایک شہری پر رکن اسمبلی الیگزینڈریا اوکیسیو کورٹز کے قتل کی کوشش کا الزام بھی دھر دیا گیا

سیاست
امریکی محکمہ انصاف نے کیپیٹل ہل پر دھاوا بولنے والے ایک شہری پر ایوان نمائندگان کی رکن الیگزینڈریا اوکیسیو کورٹز کے قتل کی کوشش کا الزام بھی لگایا ہے۔ ٹیکسس سے تعلق رکھنے والے گیریٹ ملر پر اس کے علاوہ پانچ مزید الزامات بھی لگائے گئے ہیں، جن میں اختیار کے بغیر ممنوعہ عمارت میں داخلے کا الزام بھی شامل ہے۔رکن اسمبلی کے قتل کے الزام کی وجہ ملر کے سماجی میڈیا پر شائع کردہ کچھ پیغامات بنے ہیں۔ جن میں سے ایک میں ملر نے براہ راست "الیگزینڈریا کو مارو" کا پیغام لکھا تھا۔https://twitter.com/AOC/status/1352768483101200385?s=20اس کے علاوہ ملر نے اس پولیس آفیسر کو مارنے کی دھمکی بھی دی تھی جس نے کیپیٹل ہل پر دھاوا بولنے والے مظاہرین پر گولی چلائی اور نتیجے میں ایشلی ببت نامی خاتون ہلاک ہو گئی۔ ملر نے ساجی میڈیا پر اپنے پیغام میں کہا تھا کہ ببپ کو مارنے والے آفیسر کو مرنا ہو گا، اور وہ ...
امریکہ شدید بحرانوں کا شکار ہے، سیاسی اشرافیہ حقیقی مدعوں پر بات ہی نہیں کرتی، ذرائع ابلاغ سب اچھا کا راگ الاپتا رہتا: نوم چومسکی کی رشیا ٹوڈے سے گفتگو

امریکہ شدید بحرانوں کا شکار ہے، سیاسی اشرافیہ حقیقی مدعوں پر بات ہی نہیں کرتی، ذرائع ابلاغ سب اچھا کا راگ الاپتا رہتا: نوم چومسکی کی رشیا ٹوڈے سے گفتگو

نظامت
امریکہ کے معروف سیاسی و سماجی مفکر نوم چومسکی نے امریکہ میں بڑھتی تقسیم پر رشیا ٹوڈے سے گفتگو میں کہا ہے کہ ملک کو شدید بحرانوں کا سامنا ہے لیکن امریکی میڈیا صبح شام سب اچھا ہے کا راگ الاپ رہا ہے۔ ملکی اشرافیہ مسائل کو ماننے سے انکاری ہے، انکا حل کرنا تو بہت دور کی بات ہے۔https://youtu.be/90Uz4HHUXHAمعروف امریکی سکالر کا کہنا تھا کہ امریکیوں کو خوش گمانی ہے کہ انکا ملکی نظام خود کو سدھارنے کی صلاحیت کا حامل ہے، کیپیٹل ہل واقعے پر لوگ کہہ رہے ہیں کہ جیسے اس پر ملکی سیاسی اشرافیہ نے ردعمل دیا، یہ امریکی جمہوری نظام کی خوداحتسابی کی بہترین مثال ہے۔ نوم چومسکی کا کہنا ہے کہ نیولبرل اشرافیہ کا مظبوط نظام کا ایمان حقیقت کے منافی ہے۔امریکی ذرائع ابلاغ اور سیاست پر گہری نظر رکھنے والے ماہر نوم چومسکی کہتے ہیں کہ خود کو دھوکا دینے والے خیالات امریکیوں نے واٹر گیٹ اسکینڈل کے دور میں ب...
تین سال کے بعد بغداد پھر دھماکوں سے گونج اٹھا: دو خودکش حملوں میں 32 افراد جاں بحق، 110 زخمی

تین سال کے بعد بغداد پھر دھماکوں سے گونج اٹھا: دو خودکش حملوں میں 32 افراد جاں بحق، 110 زخمی

سیاست
آج عراقی دارلحکومت بغداد کے مرکزی بازار میں دوخودکش بم دھماکے ہوئے ہیں۔ دھماکوں میں اب تک 32 افراد کے جاں بحق اور 110 کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔ محکمہ صحت کے مطابق چند زخمیوں کی حالت تشویشناک ہے۔اب تک کسی گروہ یا ملک نے حملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے تاہم حکومت نے داعش پر حملے کا الزام عائد کیا ہے۔یاد رہے کہ عراق میں گزشتہ تین سالوں میں یہ پہلا بم دھماکہ ہے۔https://twitter.com/thestevennabil/status/1352165286984617985?s=20https://twitter.com/AlArabiya_Brk/status/1352174315236716564?s=20https://twitter.com/thestevennabil/status/1352163515583197189?s=20...
آسٹریلیا میں شیطانیت بطور مذہب قبولیت کے قریب: اسپتالوں میں شیطانی علامت  نصب

آسٹریلیا میں شیطانیت بطور مذہب قبولیت کے قریب: اسپتالوں میں شیطانی علامت نصب

سیاست
سیکولر نظریات کے تحت مذاہب اور عقیدے سے متعلق مغربی تہذیب میں پروان چڑھنے والی سوچ کے باعث شیطانی تعلیمات کو بھی ایک مذہب کا درجہ حاصل ہو رہا ہے۔ امریکہ میں شیطان کی عبادت کے مراکز سے شروع ہونے والا سلسلہ آسٹریلیا میں اسپتالوں تک پہنچ گیا ہے۔ آسٹریلیا میں شیطانی گروہ کے ماننے والوں کی لابنگ کے باعث دائرے میں پانچ کونی ستارے یعنی شیطانی علامت کو دنیا کے بڑے مذاہب کی علامات کے ساتھ اسپتالوں میں نصب کیا جانے لگا ہے۔معاملے پر عیسائی اور دیگر مذہبی حلقوں کی جانب سے سخت ناراضگی کا اظہار کیا جا رہا ہے، تاہم شیطانیت کے ماننے والے حلقے اقدام کو بڑی کامیابی قرار دیے رہے ہیں۔ دوسری طرف لبرل حلقے اسے انفرادی و مذہبی آزادی قرار دیتے ہوئے اعتراضات کو مسترد کر رہے ہیں۔آسٹریلیا: کوئین لینڈ اسپتال میں شیطانیت بطور مذہب قبولآسٹریلیا میں شیطانیت کے بجاریوں کا اگلا مطالبہ ہے کہ انکے روحانی قا...