ہفتہ, اکتوبر 24 Live
Shadow

سیاست

امریکی سینٹ کی عدلیہ کمیٹی نے جج ایمی کونی کی منظوری دے دی، سینٹ ووٹ کے لیے آئندہ ہفتے انتخاب متوقع

امریکی سینٹ کی عدلیہ کمیٹی نے جج ایمی کونی کی منظوری دے دی، سینٹ ووٹ کے لیے آئندہ ہفتے انتخاب متوقع

سیاست
امریکی سینٹ کی کمیٹی برائے عدلیہ نے سپریم کورٹ کے لیے صدر ٹرمپ کی نامزدر کردہ جج ایمی کونی بیریٹ کی منظوری دے دی ہے۔اجلاس میں منظوری کے دوران ڈیموکریٹ ارکان سینٹ موجود نہ تھا، جنہوں نے کارروائی میں احتجاجاً شرکت نہ کی، اور نہ ہی ووٹ میں حصہ لیا۔تاہم کمیٹی کے تمام 12 ریپبلکن اراکین کے متفقہ ووٹ کے باعث ایمی کونی کو منتخب ہونے میں مشکل نہ ہوئی۔ سینٹ کمیٹی کو اپنی کارروائی جاری رکھنے کے لیے 9 ارکان بشمول دو خصوصی ارکان کی ضرورت ہوتی ہے، یعنی ڈیموکریٹ کا ہونا یا نہ ہونا اس انتخاب میں کوئی رکاوٹ نہیں بن سکتا تھا۔ یوں سینٹ کے عمومی ووٹ میں بھی 51 ریپبلکن ارکان کی موجودگی میں ڈیموکریٹ کا ووٹ اپنی اہمیت کھو دیتا ہے۔اب خاتون جج کا نام آئندہ ہفتے سینٹ میں منظوری کے لیے بھیج دیا جائے گا، جہاں سے بھی وہ باآسانی منتخب ہو سکتی ہیں۔واضح رہے کہ سینٹ کمیٹی میں ووٹ کے دوران ڈیموکریٹ جماعت...
بچوں کو جیل میں اوباما نے ڈالا: صدر ٹرمپ کے مہاجرین سے متعلق جواب پر جوبائیڈن شرمندہ، سابق صدر کو قربانی کا بکرا بنا راہ فرار پائی

بچوں کو جیل میں اوباما نے ڈالا: صدر ٹرمپ کے مہاجرین سے متعلق جواب پر جوبائیڈن شرمندہ، سابق صدر کو قربانی کا بکرا بنا راہ فرار پائی

سیاست
امریکی صدارتی انتخابی مہم میں ڈیموکریٹ امید وار جو بائیڈن کو اس وقت شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا جب انہیں صدر ٹرمپ کی تارکین وطن سے متعلق پالیسی پر تنقید کے ردعمل میں سابق ڈیموکریٹ صدر اوباما کی پالیسی کا دفاع کرنا پڑگیا۔ جو بائیڈن نے صدر ٹرمپ سے کہا کہ ہماری تارکین وطن سے متعلق پالیسیوں پر دنیا ہنس رہی ہے، ہم سرحد پر بچوں کو والدین سے الگ کررہے ہیں، یہ ظالمانہ پالیسیاں بطور امریکی ہماری اقدار نہیں ہیں۔جس ہر صدر ٹرمپ نے کہا کہ سرحدوں پر جیلیں اوباما نے بنائیں، یہ الزام ان پر لگایا جاتا ہے اور اخبارات میں تصاویر جاری کی جاتی ہیں کہ ٹرمپ سرحدوں پر ایسی خوفناک جیلیں بنا رہا ہے، جبکہ تفصیل دیکھی جائے تو پتہ چلتا ہے کہ وہ جیلیں اوباما نے بنوائیں۔صدر ٹرمپ نے مزید کہا کہ بچوں کو اسمگل کرنے والا ایک مافیا ہے، اور یہ اوباما دور کی پالیسیوں کا نتیجہ ہے کہ اس مافیا کی حوصلہ افزائی ہوئی۔ صدر ٹ...
ڈیموکریٹ ووٹروں کو “پراؤڈ بوائز” نام سے دھمکی آمیز ای میل ایران نے بھیجیں: سربراہ امریکی حساس ادارہ

ڈیموکریٹ ووٹروں کو “پراؤڈ بوائز” نام سے دھمکی آمیز ای میل ایران نے بھیجیں: سربراہ امریکی حساس ادارہ

سیاست
امریکی قومی حساس ادارے کے سربراہ جان ریٹ کلِف اور ایف بی آئی ذمہ دار کرس رے نے ایران پر الزام عائد کا ہے کہ امریکہ میں سفید فام گروہ "پراؤڈ بوائز" سے وابستہ دھمکی آمیز پیغامات دراصل ایران سے ہیکروں کی مدد سے بھیجے ہیں، جن کا مقصد صدر ٹرمپ کو نقصان پہنچانا ہے۔ریٹ کلف کا کہنا ہے کہ اشتعام انگیز ای میلوں کے پیچھے تہران کا ہاتھ ہے، جس کا مقصد سماجی بے امنی پیدا کرنا ہے۔یاد رہے کہ الاسکا اور فلوریڈا کی امریکی ریاستوں میں ڈیموکریٹ جماعت کے رجسٹرڈ ووٹروں کو "پراؤڈ بوائز" کے نام سے ای میل گئی ہیں جس میں کہا گیا ہے کہ ڈیموکریٹ ووٹروں کی تمام معلومات پراؤڈ بوائز کے پاس موجود ہیں اور اگر انہوں نے صدر ٹرمپ کو ووٹ نہ دیا تو انہیں نقصان پہنچایا جائے گا۔ریٹ کلف کا کہنا ہے کہ بظاہر ایران نے ووٹروں کی معلومات حاصل کی ہیں اور انتخابات سے قبل اپنے دشمن کو آخری نقصان پہنچانے کی کوشش کی ہے۔...
شمالی کوریا کی عسکری نمائش کی رپورٹ تائیوان کی ویڈیو کے ساتھ نشر کرنے پر بی بی سی کی جگ ہنسائی

شمالی کوریا کی عسکری نمائش کی رپورٹ تائیوان کی ویڈیو کے ساتھ نشر کرنے پر بی بی سی کی جگ ہنسائی

ابلاغ
برطانوی نشریاتی ادارے کو بروز ہفتہ اس وقت انتہائی شرمندگی اٹھانا پڑی جب اس نے شمالی کوریا کی عسکری نمائش کی رپورٹ میں تائیوان کی عسکری نمائش کی ویڈیو نشر کر دی۔ویڈیو میں واضح طور پر تائیوان کے جھنڈے اور قیادت کو دیکھاجا سکتا ہے تاہم بی بی سی کی غلطی نے اسے سماجی ابلاغی ویب سائٹوں پر صارفین کی تنقد اور مزاح کا خوب نشانہ بنایا۔https://twitter.com/DorinPohPoh/status/1314861233216995328?s=20ایک صارف نے لکھا کہ غلطی جھنڈوں کی مماثلت کی وجہ سے ہو سکتی ہے، جبکہ کچھ نے ادارے کی انتظامیہ کو جاہل اور خطے سے ناواقف قرار دیا۔https://twitter.com/charles04201/status/1314882769307070464?s=20غلطی پر بی بی سی کو بعد میں معافی مانگنا پڑی۔https://twitter.com/LazyWorkz/status/1314798220019671040?s=20...
امریکی حزب اخلتلاف کا صدر ٹرمپ کو ہٹانے کیلیے نیا منصوبہ منظر عام پر

امریکی حزب اخلتلاف کا صدر ٹرمپ کو ہٹانے کیلیے نیا منصوبہ منظر عام پر

سیاست
روسی مداخلت کے الزامات میں ناکامی کے بعد امریکی حزب اختلاف نے صدر ٹرمپ کی راہ میں روڑے اٹکانے کا نیا طریقہ ڈھونڈ نکالا ہے۔ امریکی اسپیکر اسمبلی نینسی پلوسی نے اعلان کیا ہے کہ وہ ایک کمیشن بنانے جا رہی ہیں جو دیکھے گا کہ صدر ٹرمپ کی صحت اتنے معیار کی ہے یا نہیں کہ وہ امریکی صدر کی ذمہ داریاں ادا کر سکیں۔https://twitter.com/cspan/status/1314227043987525633?s=20نینسی پلوسی کا کہنا تھا کہ ہم 25ویں ترمیم کی بنیاد پر صدر ٹرمپ کے خلاف کارروائی کرنے جا رہے ہیں۔اسپیکر اسمبلی کا بیان صدر سے ملاقات کے بعد سامنے آیا ہے جس میں دونوں ذمہ داران نے کووڈ19 سے متعلق بڑے امدادی وظیفے پر بات چیت کی۔https://twitter.com/W7VOA/status/1314294966588407811?s=20امریکی آئین کی 25ویں ترمیم ناگفتہ بہ حالات یعنی صدر کی اچانک موت، کسی بھی وجہ سے بہت زیادہ بیمار ہو جانے یا اچانک استعفے کے ب...
تم لوگوں نے ساڑھے 3 سال صرف صدر ٹرمپ کی حکومت ختم کرنے میں لگا دیے، امریکی نائب صدر کا مباحثے میں حریف کو کراڑا جواب

تم لوگوں نے ساڑھے 3 سال صرف صدر ٹرمپ کی حکومت ختم کرنے میں لگا دیے، امریکی نائب صدر کا مباحثے میں حریف کو کراڑا جواب

سیاست
امریکی نائب صدر مائیک پینس نے صدارتی مباحثے میں اقتدار کے پر امن منتقلی پر صدر ٹرمپ کے اعتراض پر کہا کہ ہم ہی انتخابات جیتیں گے، واشنگٹن میں 47 سال سے ہونے کی وجہ سے امریکی عوام جو بائیڈن کو بخوبی پہچانتی ہے، انکی مظبوط لابیاں ہیں تاہم امریکی عوام ان لوگوں سے تنگ ہیں، صدر ٹرمپ عام آدمی کے لیے جدوجہد کے لیے آئے، صدر ٹرمپ نے عسکری قوت کو بڑھایا ہے، معیشت کو درست راہ دکھائی ہے، تجارتی توازن کو حاصل کیا ہے، وفاقی عدالتوں میں ایسے قاضی تعینات کیے ہیں جو امریکی اقدار کے پاسدار ہیں، نہ کہ لبرل نظریے کے، یوں ہم نے پچھلے ساڈھے تین سالوں میں عام آدمی کے لیے اسکی خواہشات کے مطابق کام کیا ہے۔نائب صدر کا مزید کہنا تھا کہ ڈیموکریٹ پارٹی کی گزشتہ ساڑھے تین سالوں میں صرف ایک ہی کوشش رہی، کہ کیسے انتخابی نتائج کو پلٹا جائے۔ نائب صدر کے بیان کا حوالہ گزشتہ انتخابات میں روسی مداخلت تھا۔ تحقیقات م...
بی بی سی میزبان کا ماسک نہ پہننے پر شہریوں کو ہراساں کرنا مہنگا پڑ گیا، سوشل میڈیا پر کڑی تنقید

بی بی سی میزبان کا ماسک نہ پہننے پر شہریوں کو ہراساں کرنا مہنگا پڑ گیا، سوشل میڈیا پر کڑی تنقید

ابلاغ
برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی کے ایک پروگرام کے میزبان کو سماجی میڈیا پر کڑی تنقید کا سامنا ہے۔ جس کی وجہ انکا شہریوں کو ماسک نہ پہننے پر سڑکوں پر ہراساں کرنا ہے۔سٹیفن نولان نامی میزبان نے اپنے ایک پروگرام کے لیے سڑکوں کا رخ کیا اور وہاں ماسک نہ پہننے والوں کو غیر ذمہ دار پکارتے رہے۔ جس پر شہریوں کی طرف سے سخت تنقید کی جا رہی ہے۔https://twitter.com/vinnybelfast/status/1313931501780766722?s=20ایک شہری نے اپنی رائے میں کہا ہے کہ کچھ شہریوں کا ماسک نہ پہننے والوں پر اعتراض سمجھ میں آتا ہے لیکن کیا اس سے بی بی سی کے میزبان کو شہریوں کو ویڈیو بناتے ہوئے ہراساں کرنے کی اجازت مل جاتی ہے؟ ادارے کی انتظامیہ کی اس بارے میں کیا رائے ہے؟https://twitter.com/DenzilMcDaniel/status/1313918912069881859?s=20ایک اور شہری نے جیسے شدید ناراضگی میں لکھا ہے کہ "نولان خود کو سمجھتا کیا ہ...
امیر امیر تر: کورونا وباء کے دوران کھرب پتیوں کے اثاثہ جات میں 1/4 کا اضافہ، ماہرین کی سیاسی و عوامی ردعمل کی تنبیہ

امیر امیر تر: کورونا وباء کے دوران کھرب پتیوں کے اثاثہ جات میں 1/4 کا اضافہ، ماہرین کی سیاسی و عوامی ردعمل کی تنبیہ

نظامت
دنیا کی دو بڑی مالیاتی اور تربیتی مشاورت کی کمپنیوں کی تازہ رپورٹ میں انکشاف ہوا ہے کہ کووڈ19 وباء کے دوران دنیا کے امیر ترین افراد مزید امیر ہوئے ہیں، اور انکے اثاثہ جات میں مجموعی طور پر ساڈھے 27 فیصد، یعنی ایک چوتھائی سے بھی زیادہ کا اضافہ ہوا ہے۔تحقیقاتی رپورٹ کے مطابق وباء کے عروج کے دوران یعنی اپریل سے جولائی کے دوران یہ اضافہ 10 اعشاریہ 2 کھرب ڈالر کا تھا۔ رپورٹ کی تفصیل میں کہا گیا ہے کہ زیادہ فائدہ حصص بازار کے دوبارہ اٹھنے پر جوئے میں ہوا ہے۔رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ یہ مالیاتی اضافہ 2017 کے آخرمیں مارکیٹ کے عروج پر ہونے کے دوران بنائے 8 اعشاریہ 9 کھرب ڈالر سے بھی زیادہ کا ہے۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ارب پتیوں کی تعداد میں بھی معمولی سا اضافہ ہوا ہے اور اب یہ تعداد 2158 سے بڑھ کر 2189 ہوگئی ہے۔یو بی ایس کے سربراہ کا کہنا ہے کہ ارب پتیوں نے بنیادی طور پر چھ...
کووڈ19 کا دباؤ: برطانیہ میں عدالتیں جنسی جرائم اور تشدد میں ملوث مجرموں کو بھی کم سزا دے رہی ہیں

کووڈ19 کا دباؤ: برطانیہ میں عدالتیں جنسی جرائم اور تشدد میں ملوث مجرموں کو بھی کم سزا دے رہی ہیں

نظامت
برطانوی عدالتیں کورونا کے دباؤ کے باعث مجرموں کو کم سزا دے رہی ہیں۔ نشریاتی اداروں کی رپورٹوں کے مطابق ان مجرموں میں بچوں سے زیادتی کرنے والے مجرم بھی شامل ہیں، اور یہ سلسلہ اپریل 2020 سے جاری ہے۔ٹِم لاؤٹن نامی رکن اسمبلی نے پھبتی کستے ہوئے کہا ہے کہ ہلکی سزائیں گرمیوں کی خصوصی سیل کی طرح ضرور ہیں لیکن اس کے ساتھ ساتھ قیدیوں کو کووڈ19 کا بونس بھی مل رہا ہے۔رپورٹ کے مطابق ایسے افراد کہ جن پر جنسی ہراسگی جیسے الزامات ہیں، انہیں بھی رحم کے نام پر چھوڑا جا رہا ہے۔ ایک واقعے کا ذکر کرتے ہوئے جریدے نے لکھا ہے کہ ایک دولہے کو جو مقررہ عمر سے کم عمر کی لڑکی سے شادی کرنے والا تھا کو نظرثانی کی درخواست میں رحم کی بنیاد پر چھوڑ دیا گیا، جبکہ اس سے قبل جولائی میں اسے 20 ماہ کی سزا سنائی گئی تھی۔رپورٹ کے مطابق تشدد اور دیگر شدید جرائم میں ملوث مجرموں کے ساتھ بھی رعایت بڑتی جا رہی ہے۔...
صدر ٹرمپ کی صحت بہتر ہو رہی ہے، آج اسپتال سے فارغ کیا جا سکتا ہے: سرائے ابیض طبی عملہ

صدر ٹرمپ کی صحت بہتر ہو رہی ہے، آج اسپتال سے فارغ کیا جا سکتا ہے: سرائے ابیض طبی عملہ

سیاست
سرائےابیض کے طبیبوں کا کہنا ہے کہ صدر ٹرمپ کی صحت تیزی سے بحالی کی طرف گامزن ہے، اور ممکنہ طور پر انہیں آج بروز پیر اسپتال سے چھٹی مل جائے گی۔سرکاری طبی عملے کا کہنا ہے کہ جمعے کی رات صدر میں کورونا کی معمولی علامات سامنے آنے پر انہیں فوری نگہداشت میں لے کیا گیا تھا، اور بہتر خیال کی وجہ سے وہ تیزی سے صحت کی بحالی پر گامزن ہیں۔طبی عملے کی رپورٹ کے مطابق صدر ٹرمپ کو جمعے کے روز تیز بخار تھا اور انکے جسم میں آکسیجن کی کمی کو دیکھا گیا تھا، جس پر انہیں عسکری اسپتال منتقل کر دیا گیا۔ ضرورت کے تحت ایک گھنٹے کے لیے مصنوعی آکسیجن بھی فراہم کی گئی، اور اب صدر کی حالت تیزی سے بہتری کی طرف جا رہی ہے۔عملے نے مزید وضاحت میں کہا ہے کہ بروز اتوار صدر کو بالکل بخار نہ تھا اور سانس لینے میں بھی دشواری نہ تھی، جسم میں آکسیجن کی مقدار بھی پوری تھی، جس سے امید کی جا رہی ہے کہ وہ جلد صحت یاب ہو ج...