بدھ, جنوری 27 Live
Shadow

معیشت

چینی یوآن جلد امریکی ڈالر کی جگہ عالمی تجارتی کرنسی بن جائے گا، 21ویں صدی چینی صدی ہو گی: عالمی کاروباری رحجانات کے ماہر گیرالڈ کلنٹ کی پیشنگوئی

چینی یوآن جلد امریکی ڈالر کی جگہ عالمی تجارتی کرنسی بن جائے گا، 21ویں صدی چینی صدی ہو گی: عالمی کاروباری رحجانات کے ماہر گیرالڈ کلنٹ کی پیشنگوئی

معیشت
دنیا بھر میں کاروباری رحجانات کے معروف ماہر گیرالڈ کلنٹ نے پیشنگوئی کی ہے کہ کورونا وباء کے بعد چین جلد عالمی تجارت میں امریکہ کو پچھاڑتے ہوئے دنیا کی بڑی معاشی قوت بن جائے گا۔ٹرینڈ جرنل میں کے بانی و مدیر نے رشیا ٹوڈے کے اقتصادی معاملات کے پروگرام قیصر رپورٹ میں گفتگو کے دوران کہا کہ چین رواں سال دنیا کی تجارت پر بڑی اور نمایاں قوت رہے گا، اور اسکا یہ رحجان اکیسویں صدی میں جاری رہے گا، جیسے دوسری عالمی جنگ کے بعد امریکہ رحجان ساز بنا رہا۔https://youtu.be/lxJGWiHJFeAامریکی کاروباری رحجانات پر کئی درست پیشنگوئیاں کرنے والے سماجی ماہر کا مزید کہنا تھا کہ اکیسویں صدی چین کی صدی ہو گی، امریکہ جنگوں میں دلچسپی کے سلسلے کو جاری رکھے گا اور چین کاروباری دنیا پر چھایا رہے گا۔تاریخی مثال دیتے ہوئے امریکی ماہر کا کہنا تھا کہ امریکہ اس وقت پہلی جنگ کے بعد کے برطانیہ کے طرز پر کام ...
امریکی وفاقی بینک چھوٹے کاروباروں کے لیے قاتل بنا ہوا ہے: روسی معاشی تجزیہ کار

امریکی وفاقی بینک چھوٹے کاروباروں کے لیے قاتل بنا ہوا ہے: روسی معاشی تجزیہ کار

معیشت
رشیا ٹوڈے کے معروف پروگرام قیصر رپورٹ کے میزبان میکس قیصر اور سٹیسی ہربرٹ نے کورونا وباء کے دوران چھوٹے کاروباروں کا جائزہ لیتے ہوئے انکشاف کیا ہے کہ امریکہ کا وفاقی بینک اور اسکی پالیسیاں امریکہ کے چھوٹے کاروباروں کے لیے انتہائی مہلک ثابت ہو رہی ہیں۔میزبانوں کا کہنا ہے کہ امریکہ سیاہ دور سے گزر رہا ہے، جہاں کوئی بدعنوان جتنا چاہے لوٹ مار کرے، غیر قانونی طور پر پیسہ چھاپے، اسے کوئی روکنے والا نہیں ہے۔ روسی معاشی تجزیہ کاروں نے امریکی وفاقی بینک کی نوٹ چھاپنے کی پالیسی کا موازنہ امریکہ کے بدنام زمانہ مجرم چارلس مینسن سے کیا ہے، انکا کہنا تھا کہ بینک کی درمیانے درجے کے کاروباروں کے حوالے سے پالیسی ایسے ہی ہے جیسے 20 سال تک مینسن نے جرائم کا بازار گرم رکھا اور اسے کوئی روکنے والا نہ تھا۔ امریکی وفاقی بینک بھی امریکیوں کے لیے سب سے زیادہ ملازمتیں پیدا کرنے والے طبقے کے لیے چارلس مینسن بن...
چین اب تک لگائے اندازوں سے بھی قبل دنیا کی سب سے بڑی معاشی قوت بن جائے گا: اکانومسٹ تحقیقاتی رپورٹ

چین اب تک لگائے اندازوں سے بھی قبل دنیا کی سب سے بڑی معاشی قوت بن جائے گا: اکانومسٹ تحقیقاتی رپورٹ

معیشت
دنیا کی دوسری بڑی معیشت چین کی گزشتہ سال مجموعی مقامی پیداوار 8 اعشاریہ 2 فیصد رہی، جس نے امریکہ سمیت تمام مدمقابل معیشتوں کو پیچھے چھوڑ دیا ہے۔ اکانومسٹ کی تیار کردہ نئی تحقیقاتی رپورٹ میں ماہرین نے انکشاف کیا ہے کہ چینی معیشت دنیا کی واحد معیشت ہے جو وباء کے باوجود گراوٹ سے بچی رہی۔رپورٹ میں معاشی ماہرین نے پیشنگوئی کی ہے کہ صورتحال چین کے حق میں ہے اور چین آئندہ 8 سالوں میں ہی امریکہ کو کاٹتے ہوئے دنیا کی سب سے بڑی معاشی قوت بن جائے گا۔ معاشی ماہرین اس سے قبل چین کے قوت بننے کے لیے 2030 کا سال تجویز کرتے تھے تاہم دنیا خصوصاً امریکہ کی کورونا کے دوران زبوں خالی کے بعد اور چین کے حالات کو انتہائی حیران کن تیزی سے منظم رکھنے کی صلاحیت نے چین کی برتری کو مزید نزدیک کر دیا ہے۔اس کے علاوہ اکیسویں صدی میں تاحال چین دنیا کی سب سے تیزی سے ترقی کرتی معیشت ہے، جبکہ گزشتہ سال دنیا کی پیدا...
گزشتہ سال دنیا بھر میں موبائل فون کی طلب میں 9 فیصد کی نمایاں کمی آئی: ڈیجی ٹائمز رپورٹ

گزشتہ سال دنیا بھر میں موبائل فون کی طلب میں 9 فیصد کی نمایاں کمی آئی: ڈیجی ٹائمز رپورٹ

معیشت
ٹیکنالوجی کے بارے میں چین کے معروف نشریاتی ادارے ڈیجی ٹائمز کی نئی تحقیق کی مطابق سال 2020 میں دنیا بھر میں موبائل فون کی فروخت میں 9 فیصد کی نمایاں کمی آئی ہے۔ رپورٹ میں کورونا وباء کے باعث معاشی سرگرمیوں میں ہونے والی رکاوٹ کو کمی کا باعث قرار دیا گیا ہے۔تحقیق کے مطابق فروخت میں سب سے زیادہ گراوٹ 2020 کے پہلے 4 ماہ میں دیکھی گئی، اس دوران موبائل فونوں کی طلب میں 20 فیصد تک ریکارڈ کمی ہوئی۔ دوسرے حصے میں 10 فیصد سے زیادہ جبکہ جولائی سے ستمبر کے دوران 10 فیصد سے کم گراوٹ ہوئی۔ سال کے آخری ایک چوتھائی حصے میں گراوٹ کا سلسلہ بالآخر رک گیا اور وباء سے پہلے کی صورتحال بحال ہو گئی۔ڈیجی ٹائمز کی تحقیقاتی رپورٹ کے مطابق سال 2020 میں مجموعی طور پر سوا ارب موبائل فروخت ہوئے، جو تناسب میں 2019 کی نسبت 8 اعشاریہ 8 فیصد کم تھے۔رپورٹ میں موبائل فونوں کے حوالے سے رحجانات پر بھی بات کی گئی...
صدر ٹرمپ کا کھاتہ بند کرنے پر حصص بازار میں ٹویٹر کی قدر میں کمی، 5 ارب ڈالر کا نقصان

صدر ٹرمپ کا کھاتہ بند کرنے پر حصص بازار میں ٹویٹر کی قدر میں کمی، 5 ارب ڈالر کا نقصان

معیشت
صدر ٹرمپ کا ٹویٹر کھاتہ بند کرنے کے بعد آج حصص بازار میں ٹویٹر کی قدر میں نمایاں کمی دیکھنے میں آئی، ایک روز میں ٹویٹر کو 4 ارب ڈالر کا نقصان ہوا۔صدر ٹرمپ بند ہونے والے کھاتے کا استعمال اپنے انتخاب کے دن سے کر رہے تھے جس کی پیروی کرنے والوں کی تعداد 8 کروڑ 80 لاکھ سے زائد تھی۔صدر ٹرمپ ٹویٹر کا انتہائی متحرک استعمال کرتے تھے جس کے باعث لبرل ابلاغی ٹیکنالوجی کمپنیوں نے بھی روائیتی ابلاغی اداروں کی طرح صدر کے خلاف محاذ کھول رکھا تھا۔ کبھی صدر کے ٹویٹ تلف کیے جاتے تھے اور کبھی انکے پیغامات پر انتباہی نشان چسپاں کیے جا رہے تھے۔تاہم کیپیٹل ہل پر عوامی دھاوے کے بعد ٹویٹر نے صدر کا اکاؤنٹ مستقل طور پر بند کر دیا اور اپنی وضاحت میں لکھا کہ مزید تشدد کو روکنے کے لیے کمپنی صدر ٹرمپ کا اکاؤنٹ مستقل طور پر بند کر رہی ہے۔واضح رہے کہ کیپیٹل ہل واقعے میں پولیس نے مظاہرین کو روکنے اور ا...
برطانیہ میں معاشی ناہمواری عروج پر، 1٪ آبادی 25٪ جائیدادوں کی مالک: معاشی ماہرین کی کورونا سے نمٹنے کے لیے جائیداد ٹیکس متعارف کرنے کی سفارش

برطانیہ میں معاشی ناہمواری عروج پر، 1٪ آبادی 25٪ جائیدادوں کی مالک: معاشی ماہرین کی کورونا سے نمٹنے کے لیے جائیداد ٹیکس متعارف کرنے کی سفارش

معیشت
برطانیہ میں بڑھتی معاشی ناہمواری پر ہونے والی ایک تازی تحقیق کے نتائج کو مدنظر رکھتے ہوئے سماجی ماہرین نے حکومت کو تنبیہ جاری کی ہے، ماہرین کا کہنا ہے کہ حکومت اس ناہمواری کے سدباب کے لیے اقدامات کرے ورنہ صورتحال ہاتھ سے نکل سکتی ہے۔تحقیق کے مطابق برطانیہ کے ایک چوتھائی مکان/جائیدادیں ملک کے صرف ایک فیصد افراد کی ملکیت ہیں، یعنی ملکی آبادی کا صرف ایک فیصد مجموعی طور پر ملک کی 25 فیصد جائیدادوں کا مالک ہے، اور یہ مالیت میں تقریباً 800 ارب پاؤنڈ بنتا ہے۔ محکمہ شہری منصوبہ بندی کے مطابق یہ اعدادوشمار انتہائی محتاط ہیں، اور حقیقی صورتحال اس سے بھی زیادہ سنجیدہ ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ سرکاری اعدادوشمار میں بہت زیادہ جائیدادوں کے مالکان کا نام تحقیق میں شامل نہیں کیا گیا۔سماجی ماہرین نے حکومت کو تجویز دی ہے کہ جائیدادیں بنانے میں نظر آنے والے مالی فائدے کو کم کیا جائے، اور ان پر ٹی...
ہندوستان قابل تجدید توانائی کی کمپنیوں کی توجہ کا مرکز بن گیا

ہندوستان قابل تجدید توانائی کی کمپنیوں کی توجہ کا مرکز بن گیا

صنعت و حرفت
آبادی کے لحاظ سے دنیا کا دوسرا بڑا ملک ہونے اور توانائی کے حصول کے لیے قابل تجدید وسائل کی طرف جانے کی پالیسی اپنانے کے باعث ہندوستان ماحول دوست توانائی پر کام کرنے والی کی عالمی بڑی کمپنیوں کے لیے توجہ کا مرکز بن گیا ہے۔ایک عالمی تجزیاتی رپورٹ کے مطابق کورونا وباء کے باعث دنیا بھر میں عموماً اور مغربی دنیا میں خصوصاً توانائی کی کھپت میں نمایاں کمی آئی ہے، تاہم ہندوستان میں اس کے برعکس نہ صرف کھپت میں اضافہ ہوا ہے بلکہ ہندوستان عالمی صورتحال سے فائدہ اٹھاتے ہوئے قابل تجدید ذرائع کی طرف تیزی سے حرکت بھی کر رہا ہے۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ آج بھی ہندوستان کے دیہات کی بڑی تعداد میں بجلی یا توانائی دستیاب نہیں ہے۔ تاہم گزشتہ ایک سال میں بجلی سب کے لیے منصوبے کے تحت دیہات میں بجلی کی بلا تعطل فراہمی کو یقینی بنانے کے لیے قابل تجدید وسائل کی فراہمی پر کام تیز کر دیا گیا ہے۔ایک ارب 35...
ہندوستان: ریلائنس نے ملکی ضروت کی  25 فیصد گیس ملک سے نکالنے کے منصوبے پر کام تیز کر دیا

ہندوستان: ریلائنس نے ملکی ضروت کی 25 فیصد گیس ملک سے نکالنے کے منصوبے پر کام تیز کر دیا

معیشت
ہندوستان نے گیس کی بڑھتی طلب اور بیرونی انحصار میں کمی کے لیے ملک میں پیداوار بڑھانے کے منصوبے پر کام تیز کر دیا ہے۔ چند روز قبل ہندوستانی کی مقامی کمپنی ریلائنس اور برٹش پیٹرولیم نے گہرے سمندروں سے گیس کی پیداوار بڑھانے کے منصوبے پر کام شروع کرنے کا عندیا دیا ہے۔ منصوبے کے تحت ہندوستان کے مشرقی ساحل پر گہرے سمندروں میں موجود کنؤوں کے تین منصوبوں سے گیس حاصل کی جائے گی۔ ابتدائی اندازے کے مطابق منصوبے 2023 تک ہندوستان کی 25 فیصد ضرورت کو پورا کرنے کے لیے کافی ہوں گے۔منصوبے کی 2000 میٹر کی گہرائی اسے ایشیا کا سب سے گہرا گیس منصوبہ بناتی ہے، منصوبہ آئندہ برس کے اختتام تک یومیہ 1کروڑ 30 لاکھ کیوبک میٹر گیس فراہم کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔منصوبے میں برطانوی کمپنی کا حصہ 33 فیصد ہے، جبکہ مقامی کمپنی کا حصہ 66 فیصد سے زائد ہے۔ ریلائنس کے مالک مکیش امبانی نے منصوبے کے اعلان پر اسے ملک کی تا...
بریگزٹ معاہدہ طے پا گیا تاہم اس میں اہم کیا ہے؟

بریگزٹ معاہدہ طے پا گیا تاہم اس میں اہم کیا ہے؟

معیشت
برطانیہ اور یورپی اتحاد نے آخری تاریخ سے محض ایک ہفتہ قبل بریگزٹ کے متفقہ معاہدے پر دستخط کر دیے ہیں۔ معاہدے میں اہم کیا ہے، جانتے ہیں اس رپورٹ میں۔بریگزٹ معاہدہ 2000 صفحات پر مبنی ایک دستاویز ہے، جس میں مچھلی کے شکار کے لیے ڈاکٹری سرٹیفکیٹ سے لے کر بڑے تجارتی معاہدوں، سیاسی مفادات کے تحفظ اور عسکری ضروریات کو پورا کرنے کی تفصیل بھی شامل ہے۔تجارتمعاہدے کے تحت باہمی تجارت پر کوئی اثر نہیں پڑے گا اور دونوں فریق آزادانہ تجارت کو جاری رکھیں گے، یعنی کسی قسم کا نیا کوٹہ یا چنگی ٹیکس لاگو نہیں ہو گا۔ تاہم اب برطانوی فیکٹریوں کو یورپی معیار کے ساتھ ساتھ برطانوی معیاری سرٹیفکیٹ بھی حاصل کرنا ہو گا، یعنی برطانوی کمپنیوں کو برسلز کی اضافی تصدیق کی ضرورت ہو گی، جو پہلے اتحاد کا حصہ ہونے کے باعث لازم نہ تھی۔مچھلی پکڑنے کا علاقہبریگزٹ معاہدے کے دوران سب سے زیادہ ٹکراؤ مچھلی کے شکار...
چین: مسلم اکثریتی علاقے سنکیانگ سے 100 ارب کیوبک میٹر گیس کا ذخیرہ دریافت

چین: مسلم اکثریتی علاقے سنکیانگ سے 100 ارب کیوبک میٹر گیس کا ذخیرہ دریافت

معیشت
چین کی تیل اور گیس کے ذخائر تلاش کرنے والی کمپنی پیٹرو چائینہ نے گیس کا ایک بڑا ذخیرہ دریافت کیا ہے۔ چینی نشریاتی ادارے ژینہووا کے مطابق کمپنی کو 100 ارب کیوبک میٹر گیس کا ذخیرہ ملا ہے، جس سے یومیہ 6 لاکھ دس ہزار کیوبک میٹر گیس اور 106 کیوبک میٹر خام تیل نکالا جا سکے گا۔گیس کا ذخیرہ چین کے شمال مغربی مسلم اکثریتی علاقے سنکیانگ میں دریافت ہوا ہے۔ اس علاقے سے کمپنی کے مدیر نے ذرائع ابلاغ سے گفتگو میں کہا ہے کہ دریافت خطے کی سب سے بڑی معدنی دریافت ہے، اس سے علاقے کی فلاح و بہبود میں مدد ملے گی، اور ملک کو توانائی کے میدان میں مزید خودمختاری حاصل کرنے میں بھی مدد ملے گی۔چینی کمپنی اب تک سالانہ 30 ارب کیوبک میٹر گیس نکالنے کی صلاحیت رکھتی ہے اور آئندہ سال میں اسکا ہدف 31 اعشاریہ 6 ارب کیوبک میٹر تک لے جانے کا ہے، جو چین کی مجموعی گیس پیداوار کا چھٹا حصہ ہے۔یاد رہے کہ چین قدرتی گ...