بدھ, جولائی 28 Live
Shadow
سرخیاں
انٹرپول کی 47 ممالک میں بڑی کارروائی: انسانی تجارت، منشیات اور جسم فروشی کے لیے لڑکیوں کو بیچنے والے 286 افراد گرفتار، 430 افراد بازیابلبنان میں سیاسی بحران و معاشی بدحالی: ارب پتی کاروباری شخصیت اور سابق وزیراعظم نجیب میقاطی حکومت بنانے میں کامیاب، فرانسیسی منصوبے کے تحت ملک کو معاشی بدحالی سے نکالنے کا اعلانجنگی جہازوں کی دنیا میں جمہوری انقلاب: روس نے من چاہی خوبیوں کے مطابق جدید ترین جنگی جہاز تیار کرنے کی صلاحیت کا اعلان کر دیا، چیک میٹ نامی جہاز ماکس-2021 نمائش میں پیشکیوبا میں کورونا اور تالہ بندی کے باعث معاشی حالات کشیدہ: روس کا خوراک، ماسک اور ادویات کا بڑا عطیہ، پریشان شہریوں کے انتظامیہ اور امریکی پابندیوں کے خلاف بڑے مظاہرےچینی معاملات میں بیرونی مداخلت ایسے ہی ہے جیسے چیونٹی کی تناور درخت کو گرانے کی کوشش: چین نے سابق امریکی وزیر تجارت سمیت 6 افراد پر جوابی پابندیاں عائد کر دیںمغربی یورپ میں کورونا ویکسین کی لازمیت کے خلاف بڑے مظاہرے، پولیس کا تشدد، پیرس و لندن میدان جنگ بن گئے: مقررین نے ویکسین کو شیطانی ہتھیار قرار دے دیا – ویڈیوجرمنی: پولیس نے بچوں اور جانوروں سے جنسی زیادتی کی ویڈیو آن لائن پھیلانے والے 1600 افراد کا جال پکڑ لیا، مجرمانہ مواد کی تشہیر کیلئے بچوں کے استعمال کا بھی انکشافگوشت کا تبادلہصدر بائیڈن افغانستان سے انخلا پر میڈیا کے کڑے سوالوں کا شکار: کہا، امارات اسلامیہ افغانستان ۱ طاقت ضرور ہے لیکن ۳ لاکھ غنی افواج کو حاصل مدد کے جواب میں طالبان کچھ نہیں، تعاون جاری رکھا جائے گاامریکہ، برطانیہ اور ترکی کا مختلف وجوہات کے بہانے کابل میں 1000 سے زائد فوجی تعینات رکھنے کا عندیا: امارات اسلامیہ افغانستان کی معاہدے کی خلاف ورزی پر نتائج کی دھمکی

بلاگ

گوشت کا تبادلہ

گوشت کا تبادلہ

بلاگ
شکور صاحب پر اللّٰہ کا بڑا فضل تھا، شہر کے پوش ترین علاقے میں رہائش پذیر تھے۔ صوم و صلوٰۃ کے پابند تھے، عید الاضحیٰ پر جانور اپنی نگرانی میں ذبح کرواتے، گوشت کے حصے بنانے اور تقسیم کرنے میں شام ہو گئی۔ موسم کی شدت اور بھاگ دوڑ سے نڈھال ہو گئے۔ رات کھانے کے بعد جلد سو گئے۔ دوسرے دن بھی طبیعت میں کچھ کسلمندی سی رہی تقریباً سارا دن آرام کرتے گزرا۔ عید کے تیسرے دن ناشتے سے فارغ ہوئے تو ایک رشتے دار نواز کی علالت کا خیال آ گیا۔ تیار ہو کر ڈرائیور کے ساتھ مزاج پرسی کے لئے نکل پڑے۔ کچے علاقے میں ایک چھوٹے سے مکان کے سامنے رکے۔ دستک دی، دروازہ کھلا، اندر داخل ہوئے۔ نواز برآمدے میں چار پائی بچھاے لیٹا تھا، حال احوال پوچھا اور صحتمندی کی دعائیں دیں۔ نواز کی بیوی کچن میں کچھ بنا رہی تھی"کیا بنا رہی ہو بیٹا" شکور صاحب نے پوچھا"انکل جی دال چڑھائی ہے""آج بھی دال پکا رہی ہو""انکل گوشت کسی نے بھیجا ہی نہ...
امریکی استحصالی نظام کا پہلا شکار کون بنا؟ جنوب کی جابرانہ نظام کے خلاف جاری مزاحمت، پراپیگنڈے اور حقائق کی تاریخ

امریکی استحصالی نظام کا پہلا شکار کون بنا؟ جنوب کی جابرانہ نظام کے خلاف جاری مزاحمت، پراپیگنڈے اور حقائق کی تاریخ

بلاگ
ریاست متحدہ ہائے امریکہ میں شمال اور جنوب کی تقسیم ہمیشہ ہی اپنا سیاسی رنگ دکھاتی رہتی ہے۔ 1861 میں 11 جنوب مشرقی ریاستوں کے اتحاد میں قائم ہونے والی ریاست اور تحریک کو بظاہر ابراہم لنکن نے خانہ جنگی کے خلاف جنگ میں کچل دیا تھا لیکن آج بھی اسکے لاکھوں کھلے اور کروڑوں پوشیدہ پیروکار امریکہ میں موجود ہیں اور اسکا جھنڈا فخر سے لہراتے رہتے ہیں۔ریاست کی وفاقی حکومت کی (بظاہر) ہمیشہ سے کوشش رہی کہ اس جھنڈے اور تحریک سے نفرت کو پیدا کیا جا سکے یا کم ازکم اس سے وابستگی کو کم کیا جا سکے، حتیٰ کہ مرکزی دھارے کے ابلاغی اداروں میں تحریک سے وابستہ رہنماؤں کی منفی تصویر کشی بھی کی جاتی ہے اور انہیں نسل پرست، خارجی اور دقیانوس پیش کیا جاتا ہے لیکن ڈیڑھ سو سال کے بعد بھی اس میں ناکامی مقامی سیاسی و مالی اشرافیہ کے خلوص پر ایک بڑا سوالیہ نشان ہے۔سنز آف کنفیڈریٹ ویٹیرنز (ایس سی وی) نامی تنظیم کے م...
غلطیاں اور سبق

غلطیاں اور سبق

بلاگ
گورنمنٹ پائلٹ سکول، سیالکوٹ آٹھویں جماعت میں ہمیں ماسٹر فیروز دین صاحب ڈرائنگ سیکھاتے تھے، بہت اعلیٰ ظرف کے انسان اور مشفق استاد تھے۔ ڈرائنگ کے پیریڈ میں پوری جماعت کو ڈرائنگ روم میں جانا پڑتا تھا۔ ڈرائنگ روم قابل دید تھا، پورا ڈرائنگ روم فیروز دین صاحب کے شاہکاروں سے سجا ہوا تھا۔ ایک دن انہوں نے سب طلباء کو گھر سے سیب بنا کر لانے کا کام دیا۔اگلے دن گھریلو مشق دیکھتے ہوئے ایک لڑکے کو کھڑا کیا اور قدرے برہمی سے بولے کہ "یہ تم نے سیب بنا کر نیچے سیب کیوں لکھا ہے؟ کیا تمہیں شک ہے کہ دیکھنے والا اسے سیب کی بجائے کچھ اور سمجھ لے گا؟؟؟پھر بولے کہ "تم کام ہی ایسا کرو کہ وہ خود بولے، تمہارا کام دیکھتے ہی دیکھنے والا اسے بلا وضاحت پہچان جائے کہ یہ سیب ہے۔"پھر تھوڑے تؤقف کے بعد پوری جماعت سے مخاطب ہوئے اور کہا کہ "کام کا معیار انسان کی شخصیت کا عکاس ہوتا ہے۔ زندگی میں جو بھی کام کرو پوری ل...
میرا کشمیر شبِ تاریک کے مشعل بردار سے محروم کر دیا گیا

میرا کشمیر شبِ تاریک کے مشعل بردار سے محروم کر دیا گیا

بلاگ
وہ اک ستارہ جو ضوفگن تھا حیات کے مغربی افق پر سیاہ شب کے پاسبانو خوشی مناؤ کہ وہ بھی ڈوبامحمد اشرف خان صحرائی، کشمیرشبِ تاریک میں کسی قافلے کے مشعل بردار کا چھن جانا ایک ایسا نقصان ہے جس کی بھرپائی ایک مشکل عمل ہے۔ تاریک راتوں میں قندیل رہبانی کا کام انجام دینے والوں کی تعداد بہت مختصر ہوتی ہے۔ ملت اسلامیہ کشمیر ایسے ہی ایک چراغ سے محروم ہوگئی۔  تحریکِ آزادئ کشمیر کی صف اوّل کے رہنما محمد اشرف خان صحرائی سنت یوسفی کی ادائیگی کے دوران اپنے خالق حقیقی سے جا ملے، اور کشمیری قافلے کا ایک اور چراغ بجھ گیا۔ صحرائی صاحب کا ثبات کوہِ بلند قامت جیسا تھا۔ ایک اونچی چوٹی والے پہاڑ کی مانند، جو زلزلوں میں بھی قائم رہتا ہے۔ وہ عظمتوں اور عزیمتوں کا ایک ایسا پہاڑ تھے جن کے ثبات سے انسانیت حق پر ثابت قدم رہنے کا سبق سیکھتی ہے۔یہ صحرائی صاحب ہی تھے جنہوں نے عالمِ شباب میں شیخ عبدالل...
وباء اور دوا کی تشہیر

وباء اور دوا کی تشہیر

بلاگ
کرونا وائرس کی پہلی لہر پاکستان آئی تو سوشل میڈیا پر کرونا کے علاج کیلئے سنا مکی کا پرچار کچھ اس زور وشور سے کیا گیا کہ اس سے متاثر ہو کر لوگوں نے دھڑا دھڑ پنسار خانوں کا رخ کیا اور سنا مکی کا قہوہ پینا شروع کر دیا۔ کچھ لوگوں نے اس کے استعمال سے پیٹ درد اور پتلے پاخانے آنے کی شکائیت بھی کی۔ کرونا کے کسی مریض کو اس سے فائدہ ہوا یا نہیں، کچھ کہہ نہیں سکتا البتہ پنساریوں نے اس کا ریٹ کئی گنا بڑھا کر خوب منافع کمایا۔اسی طرح کچھ عرصہ قبل سہانجنہ (مورنگا) کا بطور کایا پلٹ ٹانک بڑا چرچا تھا۔ اس کا دوا ساز کمپنیوں نے خوب فائدہ اٹھایا، مورنگا پاؤڈر، مورنگا ٹیبلٹ اور مورنگا مدرٹنکچر بھی مہنگے داموں مارکیٹ میں آ گیا، خوب اشتہار بازی کی گئی۔ باقی رہی سہی کسر لوگوں نے پوری کر دی، سہانجنہ کے سارے درخت ہی ٹنڈمند کر کے رکھ دئیے۔"طاقت کا سرچشمہ" اور "تین سو سے زائد بیماریوں کا علاج" جیسی سرخیاں پڑھ کر میں...
مختصر نگاری

مختصر نگاری

بلاگ
اب لوگ کتابیں نہیں پڑھتے، کتابیں صرف سجاوٹ کے لیے رہ گئی ہیں۔ یہ بھی غنیمت ہے کہ لوگ سماجی میڈیا پر کچھ تحریریں پڑھ لیتے ہیں مگر وہ بھی مختصر والی۔اردو ادب میں مختصر نگاری کی ابتداء سعادت حسن منٹو نے کی۔ منٹو کے افسانچوں کا مجموعہ "سیاہ حاشیے" اسکی مثال ہے۔ موجودہ رجحانات کے مطابق بڑی کہانیاں کم سے کم لفظوں میں لکھنا ہی بہتر ہے۔ کم از کم کوئی پڑھ تو لیتا ہے۔ اعجاز احمد بٹ کا ایک افسانچہ ملاحظہ فرمائیے۔پیلے ہاتھبیٹی: "ماں تمہارا رنگ کیوں پیلا ہے؟"ماں: "بیٹی تمہارے ہاتھ جو پیلے کرنے ہیں۔"ان دو جملوں میں کتنی بڑی کہانی ہے __ چاہیں تو اس پر ایک ضخیم سا ناول لکھ لیں، مگر کتنے لوگ پڑھیں گے؟اسی طرح ابن صفی کے ایک ناول کے دو مکالمے یاد آ گئے۔ کرنل فریدی سارجنٹ حمید سے کچھ پوچھتا ہے، حمید کچھ الٹی سیدھی کہانی سناتا ہے۔فریدی: "حمید تمہارے چہرے پر سچائی نظر نہیں آتی۔حمید: ...
مریض کی تیماداری کا درست طریقہ

مریض کی تیماداری کا درست طریقہ

بلاگ
او ہو آپ تو بہت کمزور ہو گئے ہیں اور جلد کی رنگت بھی کتنی خراب ہو گئی ہے، آپ کو اس حال میں دیکھ کر دل بہت دکھی ہوا، کیا شاندار صحت تھی آپ کی، توبہ بہت تکلیف دہ مرض ہے، بندے کو نچوڑ کر رکھ دیتا ہے، اللّٰہ آپ کو مکمل صحت اور لمبی زندگی عطا فرمائے۔بعض لوگ مزاج پرسی کچھ ایسے منفی انداز میں کرتے ہیں کہ ان کی ہمدردی بھی مریض کو صحت کے متعلق مزید تشویش میں مبتلا کر دیتی ہے، بیماری کی حالت میں مریض اپنی صحت کے بارے میں بہت حساس ہو جاتا ہے اور حوصلہ افزا یا حوصلہ شکن باتوں کا اثر تیزی سے قبول کرتا ہے۔کافی عرصہ پہلے میرے ایک نفسیات کے شوقین دوست راشد نے اسی ضمن میں ایک تجربہ کیا تھا جو آپ کو بھی بتاتا ہوں۔راشد کا بڑا بھائی امجد سیالکوٹ کے بازار کلاں میں دکاندار تھا، ایک دفعہ کچھ دن بیمار رہنے کے بعد بہت کمزور ہو گیا اور دکان پر جانا ترک کر دیا، سارا دن مایوسی کے عالم میں بستر پر پ...
بچوں کو بڑوں کی ڈانٹ ڈپٹ کی ابدی روایت اور تجربے کی بھٹی

بچوں کو بڑوں کی ڈانٹ ڈپٹ کی ابدی روایت اور تجربے کی بھٹی

بلاگ
میں ایک ڈاکٹر ہوں، لیکن میرا بیٹا بھی میرے لاکھ منع کرنے کے باوجود مجھ سے چوری دوستوں کے ساتھ ریستورانوں میں کھانے کھاتا ہے۔ میں اب اس چیز کو جان گیا ہوں کہ وہ میری بات نہیں سمجھ پا رہا، لیکن پھر بھی اپنی تسلی کے لیے اکثر نت نئے طریقوں سے اسے سمجھانے کی کوشش کرتا رہتا ہوں، اسے ڈانٹتا بھی ہوں اور بازار کے ناقص کھانوں کے مضر اثرات سے ڈراتا بھی رہتا ہوں، لیکن تاحال اسےمنع کرنے میں کامیاب نہیں ہو سکا۔ بسا اوقات مجھے لگتا ہے کہ یہ انسانی فطرت میں ہے کہ اسے سبق کی دوہرائی مطلوب رہتی ہے، اس لیے کتاب ہدایت نازل ہونے کے باوجود اللہ نے ہر جمعہ انسان کو جمعے کے اجتماع کے لیے طلب کیا ہے۔خیر، اپنے بیٹے کے حوالے سے پریشانی کے ساتھ ساتھ بسا اوقات اپنے ماضی میں بھی کھو جاتا ہوں، یاد کرتا ہوں کہ میں بھی اس کی عمر میں ایسے ہی دوستوں کے ساتھ بازاری کھانوں سے خوب لطف اندوز ہوتا رہا ہوں، اس وقت لگتا تھا ک...
خون کی کمی کا علاج تعویز کو جوتے مارنے سے نہیں ہو گا: ڈاکٹر انیقہ

خون کی کمی کا علاج تعویز کو جوتے مارنے سے نہیں ہو گا: ڈاکٹر انیقہ

بلاگ
پھولی ہوئی سانسوں میں آٹا گوندھتے ہوئی نِدا کے بازو پر ماں کی نظر پڑی تو بے ساختہ چلا اٹھی کہ  آج پھر نیل پڑے ہوئے ہیں، "پھر کسی نے جادو کا وار کیا ہے، ہاۓ میری بچی کو نجانے سوتے میں کتنا مارا ہے چڑیلوں نے، بیڑا غرق ہو دشمنوں کا"۔ اماں نے فوری چادر اوڑھی اور اپنے پیر کے پاس بھاگی، دوڑتے ہوئے ہمیں کہہ گئی کہ "ابا آئیں تو کہنا اماں سبزی لینے گئی ہے"۔کچھ دیر بعد اماں واپس آئی اور فرش پر بیٹھ کر ایک تعویذ کو جوتے مارنے لگی، اور ساتھ ساتھ بولتی گئی کہ "جیسے میری بچی کو مارا تھا اب تو بھی مار کھا، آئندہ کبھی تیری ہمت نہیں ہو گی کہ میری معصوم جان کو نقصان پہنچائے۔ آج تو میں تمہیں جلا دوں گی"۔ یعنی نِدا کو مارنے والی چڑیل اب اماں کے قابو میں تھی، جوتے مارنے کے بعد اماں نے تعویذ جلایا اور سکون سے بیٹھ گئی۔یہ ہمارے معاشرے کی موجودہ صورت حال ہے جہاں کم علم عورتیں حتیٰ کہ بسا اوقات بظا...
ایک وقت میں مختلف طریقہ علاج اور اس کے نقصانات

ایک وقت میں مختلف طریقہ علاج اور اس کے نقصانات

بلاگ
ڈاکٹر اکثر اس مسئلے سے دوچار ہوتے ہیں کہ کچھ مریض دو مختلف طریقہ علاج، مثلاً ہومیوپیتھک اور ایلوپیتھک ادویات کا اکٹھا استعمال کر رہے ہوتے ہیں۔ طبیعت بہتر یا مزید خراب ہونے کی صورت میں یہ پتہ نہیں چلتا کہ کس دوا نے کام کیا ہے اور  بعض دفعہ دونوں کے متضاد عمل کی وجہ سے سنگین صورت حال بھی پیدا ہو جاتی ہے۔دراصل بیشتر مریضوں میں دونوں پھیتھیوں کے فلسفہ علاج کی آگاہی موجود نہیں ہے، ہومیو طریقہ علاج میں دوا مرض کو مرکز سے محیط کی طرف دھکیلتی ہے جبکہ ایلوپیتھک دوا محیط سے مرکز کیطرف لے کر جاتی ہے۔ مثلاً جسم پر کوئی پھوڑا پھنسی نکل آئے تو ایلوپیتھی اسے خشک کرنے کی کوشش کرتی ہے، جبکہ ہومیوپیتھک دوا فاسد مواد کو جسم سے باہر نکالنے کے لیے کام کرتی ہے۔ہومیوپیتھک دوا سے بخار پہلے تھورا تیز ہونے کے بعد اترتا ہے جبکہ ایلوپیتھک دوا فوراً جسمانی درجہ حرارت کم کرنے کی کوشش کرتی ہے۔زکام اور فلو م...

Contact Us