بدھ, April 21 Live
Shadow

بلاگ

صحافت یا صحافی نہیں عوام غلط ہے: واشنگٹن پوسٹ کالم نگار کی صحافیوں کے حق میں تحریر – سماجی میڈیا پر عوامی ردعمل

صحافت یا صحافی نہیں عوام غلط ہے: واشنگٹن پوسٹ کالم نگار کی صحافیوں کے حق میں تحریر – سماجی میڈیا پر عوامی ردعمل

بلاگ
"امریکی صحافی خود کو حق گو اور بدعنوانی کے احتساب کیلئے خدائی ترجمان سمجھتے ہیں، لیکن جب عام عوام اس خیال کو نہیں مانتی تو یہ وضاحتوں پر اتر آتے ہیں۔" مارگاریت سولیوان، واشنگٹن پوسٹhttps://twitter.com/Sulliview/status/1382287998608367616?s=20امریکی صحافی کا ماننا ہے کہ موجودہ دور میں جدید صحافت کیلئے طے کردہ امریکی اقدار؛ "بدعنوانی کا احتساب، شفافیت، گناہ کو سامنے لانے اور بے آواز کو آواز دینے" میں، اور عام عوام میں بڑا پردہ حائل ہو گیا ہے۔اپنی ایک تازہ تحریر میں امریکی صحافی نے تحقیقی مطالعہ پر تبصرے میں لکھا ہے کہ امریکہ کی صحافت کے لیے طے کردہ اقدار اب مزید عوامی امنگوں کی عکاسی نہیں کرتیں۔ عوامی سروے میں سامنے آیا ہے کہ 5 میں سے صرف 1 امریکی شہری اوپر دی گئی صحافتی اقدار سے متفق ہے۔ مطالعہ کو وسعت دیتے ہوئے جب شہریوں کو حق کے علمبردار، وفاشعار، بااخلاق اور صحافت کی حمای...
پاکستان ازبکستان نامہ – عباس خان تاشقند

پاکستان ازبکستان نامہ – عباس خان تاشقند

بلاگ
کووڈ-19 خطرہ ہے۔ اس نے دنیا بھر میں حرکت میں برکت والے معاملے کو منجمد کر دیا ہے۔ دنیا میں ہرقسم کی حرکت روک دی گئی ہے۔ وباء کے ہر ملک اور قوم پر منفی اثرات مرتب ہوئے ہیں۔ مگر اس ساری صورتحال کے باوجود پاکستان اور ازبکستان کے تعلقات بتدریج آگے بڑھ رہے ہیں۔ ازبکستان سے دو اعلیٰ سطحی وفود نے پاکستان کا دورہ کیا ہے۔ وفود نے کابل کا دورہ بھی کیا۔ جس کا مقصد ان امکانات سے فائدہ اٹھانا تھا جو گوادر پورٹ کے عمل میں آنے کے نتیجے میں پیدا ہورہے ہیں۔ اس کے علاوہ ان معاملات پر بھی غور کیا جا رہا ہے کہ پاکستان کو ریلوے کے ذریعےمزارشریف سے ملا دیا جائے۔ مزار شریف سے تاشقند بذریعہ ریلوے پہلے ہی جُڑچکے ہیں۔ منصوبہ ازبکستان اور ایشین ڈیویلپمنٹ بنک نے مل کر مکمل کیا ہے۔پاکستان یلوے بھی مزار شریف منصوبے میں دلچسپی رکھتی ہے، تاہم منصوبہ روائیتی غیر سنجیدگی اور سست روی کا شکار ہے۔ ہمارے ایک وزیر نے ...
ازبکستان میں والد کے دن کی جگہ یوم دفاع کیوں منایا جاتا ہے؟

ازبکستان میں والد کے دن کی جگہ یوم دفاع کیوں منایا جاتا ہے؟

بلاگ
محمد عباس خان - تاشقند (خصوصی نمائندہ آج روس)یوم دفاع ازبکستان کی انتیسویں سالگرہ رواں سال بھی جوش و خروش سے منائی گئی۔ اس موقع پر صدر شوکت میر ضیائیف کا کہنا تھا کہ تہوار ہماری قوم کی حب الوطنی، قربانی، جوانمردی اور خلوص جیسی خصوصیات کو ظاہر کرتا ہے۔ میں دل کی گہرائیوں سے ساری قوم خصوصاً افواج کو مبارکباد دیتا ہوں۔واضح رہے کہ ازبکستان میں یوم دفاع ایک بڑے قومی تہوار کی حیثیت اختیار کر گیا ہے۔ ایسا تہوار کی جس کی تاریخ سوویت دور سے جا ملتی ہے۔ سوویت یونین میں 23 فروری کو افواج کی تشکیل کا دن منایا جاتا تھا۔جسے عام طور پر مردوں کا دن مانا جاتا تھا، سوویت یونین میں تمام بالغ اور صحتمند مردوں پر فوجی تربیت اور خدمات لازم تھیں، تمام مرد سوویت فوج کا حصہ ہوتے تھے۔یوں اس تہوار کے دن خواتین مردوں کو مبارکباد دیتی تھیں۔ بیٹیاں، مائیں، بہنیں، بیویاں اپنے والد، بیٹوں، بھائیوں اور خاون...
گاؤں کی اغوا شدہ بچی کی بازیابی

گاؤں کی اغوا شدہ بچی کی بازیابی

بلاگ
کچھ عرصہ قبل ہمارے گاؤں میں ایک بدمعاش نے ایک شریف زادے کی نوزائیدہ بچی کو اغوا کر لیا، بچی انتہائی خوبصورت تو تھی ہی جیسی خدا کی دین ہوتی ہے مگر والدین کے لیے وہ دیگر بچوں کی طرح ایک اولاد ہی تھی۔ بدمعاش کی شہر میں بڑے بدمعاشوں کے ساتھ دوستی کے باوجود شریف زادے نے بچی کو واپس حاصل کرنے میں کوئی کسر نہ چھوڑی۔ مصدقہ حوالوں کے مطابق اس نے ایک دو دفعہ تو بدمعاش کا گلے بان بھی پکڑ لیا اور خوب پھینٹا بھی چڑھایا، اس کے علاوہ دیگر چھوٹی موٹی لڑائیوں میں اکثر خون آلود بھی ہوتے رہتے ہیں، جب کہ ایک بار تو اس کا ایک بیٹا ایسی ایک لڑائی میں شہید بھی ہو گیا۔ لیکن ہمیشہ بدمعاش کے شہری دوست زبردستی صلح اور امن کا ڈھول اس کے گلے میں ڈال دیتے۔وقت گزرتا گیا، کل کی نوزائیدہ آج کی خوبرو دوشیزہ بن گئی۔ مگر والدین آج بھی اولاد کے لیے تڑپ رہے ہیں، اور اب کسی نہ کسی حد تک باپ نے اہل علاقہ کے دیگر شریف زادوں ...
کشمیر میں اردو کا مستقبل

کشمیر میں اردو کا مستقبل

بلاگ, پاکستان, علاقائی تہذیبیں
اگست 2019 کو بھارتی حکومت نے کشمیر کی آئینی حیثیت کو بزور طاقت ختم کرکے خطے کے مسلم تشخص کو ببانگ دہل ختم کرنے کا آغاز کر دیا۔ اس میں ریاست میں اردو کی مرکزی حیثیت کو ختم کرنا اور کشمیری زبان کے رسم الخط کو بدل دینا بھی شامل ہے۔اردو کے بارے میں مودی سرکار کے مستقبل کے پلان کا اندازہ صرف دس دن بعد اس وقت ہوا جب بھارت کے یوم آزادی 15 اگست کی سرکاری تقریب میں ریاستی گورنر ستیہ پال ملک نے اپنا خطاب شدھ ہندی میں کیا جو محصور کشمیریوں کو سرکاری ٹیلیوژن کی وساطت سے دیکھنے کو ملا۔مجھے نہیں معلوم کہ اس پر کسی جانب سے کوئی تبصرہ بھی ہوا یا نہیں کیونکہ اس وقت ہم سب سخت ترین محاصرے میں اور بیرونی دنیا سے مکمل طور پرکٹے ہوئے تھے۔ مگر گورنر صاحب کے خطاب کے بعد ہمیں مستقبل قریب کی خوفناک صورتحال کا بخوبی ادراک ہوگیا تھا۔ اس سے پہلے کشمیر میں گورنر راج کے کئی ادوار میں سرکاری تقریبات میں تقریریں ...
صومالیہ کی مسجد قبلتین کے آثار بھی ناپید ہونے کے قریب

صومالیہ کی مسجد قبلتین کے آثار بھی ناپید ہونے کے قریب

آج روس خاص, بلاگ
دنیا بھر کے مسلمان شاید صرف ایک مسجد قبلتین (دو قبلے والی مسجد) کو ہی جانتے ہوں، جو سعودی عرب کے شہر مدینہ المنورہ میں ہے۔ تاہم مشرقی افریقی ملک صومالیہ میں بھی دو محرابوں والی ایک مسجد کے کچھ اثار موجود ہے، جس کے متعلق دعویٰ کیا جاتا ہے کہ وہ بھی مسجد قبلتین تھی۔مسجد قبلتین، صومالیہروایت کے مطابق صومالیہ کی مسجد قبلتین ان صحابیوں کی تعیر کردہ تھی جنہیں کفار مکہ کے مظالم سے بچنے کے لیے حضرت محمد ﷺ نے حبشہ کی جانب ہجرت کر جانے کا حکم دیا تھا۔ اس وقت مسلمان مسجد اقصیٰ، بیت المقدس کے رخ نماز ادا کرتے تھے تاہم بعد میں حکم ربی کے تحت قبلہ مکہ المکرمہ، میں خانہ کعبہ کے رخ کر دیا گیا۔ یوں صومالیہ کے شہر ژیلا کی مسجد کا قبلہ بھی تبدیل ہوا اور اس مسجد کو بھی قبلتین کا نایاب نام مل گیا۔ یاد رہے کہ اس مسجد کو افریقہ کی پہلی مسجد ہونے کا اعزاز بھی حاصل ہے۔مسجد قبلتین کے آثار، صومالیہ ...
ہمارے بچے فقط ’نوکر بننے‘ کے لیے تعلیم حاصل کرتے ہیں

ہمارے بچے فقط ’نوکر بننے‘ کے لیے تعلیم حاصل کرتے ہیں

بلاگ
مشہور کہاوت ہے کہ پوت کے پاؤں پالنے میں ہی نظر آجاتے ہیں۔ انیٹ لارو اپنی تحقیق میں اس بات کو مزید تقویت دیتی نظر آتی ہیں۔شمولیتی کردار سازی ان کا متعارف کردہ ایک پرورش کا انداز ہے، جس میں والدین اپنے بچوں میں موجود صلاحیتوں کو پروان چڑھانے کے لیے مختلف قسم کی منظم سرگرمیاں ان کی زندگی میں شامل کرتے ہیں۔ ہمارے دیسی اندازِ پرورش میں والدین انیٹ لارو کی تھیوری کو مکمل طور پر رد کرتے ہوئے اور بچے کی صلاحیتوں سے بھی قطع نظر اپنی خواہشات کے تناظر میں بچے کے کیرئیر کی منصوبہ بندی کرتے ہوئے اس کی ذہن سازی شروع کر دیتے ہیں۔ میرا بیٹا تو بڑا ہوکے ڈاکٹر ہی بنے گا اس کے علاوہ انجینئر یا وڈا افسر بننے کی خواہش بھی ظاہر کی جاتی ہے۔ یعنی پچھلی کئی نسلوں نے تعلیم کے حصول کا واحد مقصد کسی کا نوکر بننے کی صلاحیت حاصل کرنا طے کر لیا ہے۔ اس صورت حال میں پرورش پانے والا بچہ ذہنی طور پر اپنے تمام معاشی مسا...
مغربی ذرائع ابلاغ اوراستشراقیت کی ترویج

مغربی ذرائع ابلاغ اوراستشراقیت کی ترویج

بلاگ
بیشتر مشرقی معاشروں میں احساس کمتری اور مغرب میں احساس برتری خود پیدا نہیں ہوئے، بلکہ اس کے لیے کچھ قوتوں نے باقائدہ کئی دہائیاں کام کیا ہے۔ کسی قوم کے زیادہ تہذیب دار، بہادر، اور کسی کے کم تر، بزدل ہونے کے بیانیے شاید صدیوں پہلے غیر ارادی طور پر شروع ہوئے ہوں، جن کا مقصد میدان جنگ میں محض افواج کے یا اقوام کے حوصلے کو بڑھانا ہو پر اس کے اثرات کو بھانپ جانے کے بعد اسے بدعنوان عناصر نے دیگر مقاصد کے لیے استعمال کرنا شروع کر دیا، جس کے لیے سائنسی علوم اور ذرائع ابلاغ کا بھی بھرپوراستعمال کیا گیا۔ معروف مثالوں میں سیاہ فاموں سے متعلق ہارورڈ اور آکسفورڈ کی تحقیقات اور دونوں عالمی جنگوں میں ذرائع ابلاغ کے استعمال ہیں۔مسئلے کے ادراک کے بعد دنیا بھر سے صاحب فکر افراد نے استشراقیت کے عنوان سے مسئلے پر بھرپور کام کیا اور انسانیت کی بھرپور رہنمائی کی۔ تاہم اس غیر فطری انسانی تفریق سے ج...