بدھ, اکتوبر 21 Live
Shadow

طب

بچوں کے دماغ سے آلودہ دھاتی ذرات برآمد: محققین کے مطابق آلودہ ہوا ہی  الزائمراور رعشہ کا باعث ہے

بچوں کے دماغ سے آلودہ دھاتی ذرات برآمد: محققین کے مطابق آلودہ ہوا ہی الزائمراور رعشہ کا باعث ہے

طب
نئی تحقیق میں سامنے آیا ہے کہ فضائی آلودگی بچوں کے دماغی خلیوں کو الزائمر اور رعشہ کی طرز پر ہی نقصان پہنچاتی ہے۔تحقیق کے دوران محققین کو بچوں کے دماغ سے چھوٹے دھاتی ذرات دریافت ہوئے ہیں۔ اور محققین کے مطابق یہ ذرات بچوں کے دماغی خلیوں کو یوں ہی مارتے ہیں جیسے الزائمر اور رعشہ کی بیماری کے دوران دماغی خلیوں مرتے ہیں۔محققین نے شمال امریکی ملک میکسیکو کے 186 مردہ بچوں کے دماغ پر تحقیق کی ہے، جس کے نتائج ماحولیاتی تحقیق کے معروف جریدے میں چھاپے گئے ہیں۔تحقیق کے مطابق دریافت ہونے والے دھاتی ذرات بچوں کے دماغی خیلوں کو مارتے ہیں۔ تفصیل کے مطابق آلودہ ذرات دماغ کے اس حصے میں پائے گئے جو حصہ متاثر ہونے پر رعشہ کی علامات سامنے آتی ہیں۔ محققین کے مطابق ممکنہ طور پر رعشہ اور الزائمر کی وجوہات یہی آلودہ ذرات بنتے ہیں۔ محققین کی رائے میں آلودگی کے یہ ذرات دماغ تک ناک اور گلے کے ذریعے ...
برطانیہ میں کورونا ویکسین کی ترسیل فوج کرے گی: سیکرٹری صحت

برطانیہ میں کورونا ویکسین کی ترسیل فوج کرے گی: سیکرٹری صحت

طب
برطانوی سیکرٹری برائے شعبہ صحت و سماجی تحفظ میٹ ھین کاک نے اعلان کیا ہے کہ ملک میں کورونا ویکسین کی ترسیل کے لیے فوج کی خدمات لینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ سیکرٹری کا کہناہے کہ حکومت وباء کے خلاف اپنی استطاعت کے مطابق کام کر رہی ہے، اور پوری کوشش میں ہے کہ وباء سے جلد چھٹکارہ حاصل کیا جا سکے۔حکومتی ذمہ دار کا مزید کہنا تھا کہ فوج کی مدد کے علاوہ شہریوں کی جائے وقوعہ سے آگاہ کرنے والی آن لائن ایپیکیشنوں کا استعمال بھی کیا جائے گا، تاکہ زیادہ متاثرہ علاقوں اور ضرورت مند افراد کو پہلے ویکسین کی فراہمی یقینی بنائی جا سکے۔ کورونا سے متعلق عوامی خدمت کی ایپلیکیشن کو برطانیہ میں اب تک ایک ماہ میں ڈیڑھ کروڑ سے زائد شہریوں نے ڈاؤنلوڈ کیا ہے اور شہری اس کا متحرک استعمال بھی کر رہے ہیں۔تاہم دوسری طرف صحت سے متعلق ہنگامی حالات میں فوج کے استعمال پر ملک بھر میں شدید تنقید بھی کی جا رہی ہے۔ برطانوی...
کورونا: 44 فیصد شہری کہتے ہیں حکومت 100$ دے تو شاید وہ ویکسین لگوالیں

کورونا: 44 فیصد شہری کہتے ہیں حکومت 100$ دے تو شاید وہ ویکسین لگوالیں

طب
امریکہ میں کورونا ویکسین کو لے کر مایوسی اپنے عروج پر ہے۔ ایک تازہ ترین سروے کے مطابق کی 44 فیصد شہریوں کا کہنا ہے کہ وہ ویکسین نہیں لیں گے تاہم اگر حکومت انہین ساتھ 100$ دے تو وہ سوچ سکتے ہیں۔سروے کے مطابق صرف 26 فیصد امریکی شہریوں کا کہنا ہے کہ وہ قیمت ادا کر کے بھی ویکسین لینے کو تیار ہیں، جبکہ مفت لگوانے کے حامی بھرنے والے شہریوں کی تعداد تقریباً 50٪ ہے۔باسٹھ فیصد امریکی شہریوں کا یہ بھی کہنا ہے کہ وہ اپنے نجی معالج کے مشورے کے بغیر کورونا ویکسین نہیں لگوائیں گے۔ جبکہ حکومتی ادارہ برائے ادویات پر صرف 52 فیصد عوام کو اعتماد ہے۔ حکومتی سفارش پر ویکسین لینے والے شہریوں کی تعداد صرف 19 فیصد ہے، تاہم ریپبلکن جماعت سے تعلق رکھنے والے 60 فیصد شہریوں کا کہنا ہے کہ وہ صر ٹرمپ کے کہنے ہر ویکسین لگوا لیں گے۔سروے رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ نتائج سے اخذ کیا جا سکتا ہے کہ پچاس فیصد سے بھی ...
کورونا نے دس لاکھ افراد کو لقمہ اجل بنا دیا: امریکہ، ہندوستان اور برازیل سب سے زیادہ متاثرہ ممالک

کورونا نے دس لاکھ افراد کو لقمہ اجل بنا دیا: امریکہ، ہندوستان اور برازیل سب سے زیادہ متاثرہ ممالک

طب
کورونا وائرس نے د س ماہ میں دس لاکھ انسانی زندگیاں کھا لیں۔ بیشتر ممالک میں وائرس کا زور تاحال ٹوٹ نہ سکا۔عالمی ادارہ صحت کی رپورٹ کے مطابق وائرس سے اب تک 3 کروڑ 30 لاکھ افراد متاثر ہوئے ہیں، ادارے نے وباء کو ماضی قریب کا سب سے بڑا قدرتی المیہ قرار دیا ہے۔رپورٹ کے مطابق وباء نے دنیا کے 188 ممالک کو متاثر کیا ہے، جبکہ روزمرہ کی زندگی پوری دنیا میں متاثر ہوئی ہے۔ اور معیشت کا پہیہ بالکل رک گیا ہے۔اب تک متحدہ ہائے امریکہ دنیا کا سب سے زیادہ متاثرہ ملک ہے، جہاں 71 لاکھ سے زائد افراد متاثر اور 2 لاکھ 5 ہزار سے زائد اموات ہو چکی ہیں۔ 60 لاکھ متاثرہ افراد کے ساتھ ہندوستان دوسرے نمبر پر جبکہ برازیل ایک لاکھ اموات کے ساتھ تیسرے نمبر پر ہے۔دوسری طرف یورپ میں وباء کی دوسری لہرکا شور ہے۔ برطانیہ اور فرانس میں گزشتہ ہفتے متاثرہ افراد کی تعداد میں شدید اضافہ ہوا۔ جس کے باعث حکومتوں نے ...
امیر ممالک نے کورونا ویکسین کی آدھی سے زیادہ مقدار خرید لی، غریب ممالک مشکل سے دوچار ہو سکتے ہیں: آکسفام

امیر ممالک نے کورونا ویکسین کی آدھی سے زیادہ مقدار خرید لی، غریب ممالک مشکل سے دوچار ہو سکتے ہیں: آکسفام

طب, عالمی
معروف عالمی فلاحی تنظیم آکسفام نے دعویٰ کیا ہے کہ امیر ممالک کووڈ19 ویکسین کی آدھی سے زیادہ مقدار خرید چکے ہیں۔ جو کہ دنیا کی آبادی کا صرف 13 فیصد ہیں۔ جبکہ دوسری طرف 87 فیصد آبادی کے حامل غریب ممالک تاحال اس حوالے سے کوئی مربوط پالیسی نہیں بنا سکے، اور نہ انکے پاس وسائل ہیں۔ ایسے میں عالمی فلاحی ادارے نے ممالک کو روسی ویکسین کی طرف رحجان کرنے کی مشورہ دیا ہے۔آکسفام کا کہنا ہے کہ آئندہ چند ہفتوں میں کورونا ویکسین تجربے کے مراحل سے گزر کر عوام الناس کے لیے دستیاب ہو گی تاہم اس کی مساوی دستیابی ایک بڑا سوال بن کر ابھر رہا ہے۔ آکسفام کا ماننا ہے کہ ادویات ساز کمپنیاں کشیدہ حالات سے بھرپور فائدہ اٹھانے کی کوشش کریں گی، اور عوامی بہبود کے لیے اب تک کوئی فکر سامنے نہیں آئی ہے۔آکسفام کے مطابق ویکسین تیار کرنے والی پانچ بڑی کمپنیوں نے امریکہ، برطانیہ، یورپی یونین کے ممالک، آسٹریلیا، ہان...
برطانیہ میں محض 400 کووڈ19 ٹیسٹ مراکز: عوامی دشواریوں پہ حکومتی اعتراف

برطانیہ میں محض 400 کووڈ19 ٹیسٹ مراکز: عوامی دشواریوں پہ حکومتی اعتراف

طب
برطانیہ نے اعتراف کیا ہے کہ ملک میں کووڈ19 کے ٹیسٹ کی سہولیات انتہائی کم ہیں۔ تاہم انتظامیہ کا کہنا ہے کہ وہ مراکز کی تعداد بڑھانے کی کوشش کر رہے ہیں۔حکومتی نمائندگان کا کہنا ہے کہ ملک کو اس وقت سے صحت کے شعبے میں سخت حالات کا سامنا ہے، اور حکومت ہر ممکن حد تک اس میں سہولت فراہم کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔ ملک میں اس وقت 400 ٹیسٹ مراکز کام کر رہے ہیں، اور ہماری کوشش ہے کہ انہیں جلد بڑھا کر 500 کر دیا جائے۔نمائندگان کا یہ بھی کہنا ہے کہ لوگ ہیجان کا شکار ہیں، ہرکسی کا ٹیسٹ کرنا ممکن نہیں، حکومت زیادہ تر حساس علاقوں میں ٹیسٹ کو ترجیح دے رہی ہے۔ جبکہ صحت کے شعبے میں کام کرنے والے، سماجی گھروں میں کام کرنے والے اور اسکول جانے والے بچوں اور انکے والدین کو ترجیح دی جا رہی ہے۔ معاملات آئندہ چند ہفتوں تک سنبھال لیے جائیں گے۔تاہم لوگوں کا کہنا ہے کہ حکومت اتنے ماہ سے بے بس نظر آرہی ہے، چ...
کورونا  کے 1٪ مریضوں کے پھیپھڑوں میں سوراخ ہو جاتے ہیں: تحقیق

کورونا کے 1٪ مریضوں کے پھیپھڑوں میں سوراخ ہو جاتے ہیں: تحقیق

طب
معائنے میں پتہ چلا ہے کہ کووڈ19 کے ہر 100 میں سے ایک مریض کے پھیپھڑوں میں سوراخ ہو جاتے ہیں۔ جس کے باعث گہری سانس لینے میں دشواری اور سینے میں شدید درد جیسے مسائل کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ڈاکٹروں کو معائنے میں پتہ چلا ہے کہ پھیپھڑوں میں سوراخ کے باعث ہوا پھیپھڑوں اور سینے کی جھلی کے درمیان جھکڑی رہتی ہے اور دباؤ بناتے ہوئے اندرونی اعضاء کو نقصان پہنچاتی ہے۔ جبکہ ایسے افراد جو پہلے سے پھیپھڑوں کے مرض کا شکار ہوں ان کے پھیپھڑوں میں سوراخ کا خدشہ زیادہ ہوتا ہے۔اب تک کے اعدادو شمار کے مطابق پھپھڑوں میں سوراخ کے بعد دو تہائی مریض صحت یاب ہو جاتے ہیں، جبکہ پھیپھڑوں میں سوراخ کا مسئلہ بھی کووڈ19 کی طرح خواتین کی نسبت مردوں میں زیادہ دیکھا جا رہا ہے۔ اور تیزابی خون والے مریضوں میں اس مسئلے کے خطرات مزید بڑھ جاتے ہیں۔یاد رہے کہ تحقیق کے نتائج فی الحال صرف برطانوی شہریوں کے معائنے سے اخ...
سعودیہ اور روس کا مل کر کورونا ویکسین کی پیداوار پر کام کا اعلان

سعودیہ اور روس کا مل کر کورونا ویکسین کی پیداوار پر کام کا اعلان

طب, عالمی
روسی خبر رساں ادارے کے مطابق روسی صدر ولادی میر ہیوٹن اور سعودی بادشاہ سلمان بن عبدالعزیز میں رابطہ ہوا ہے جس میں دونوں قائدین نے کورونا ویکسین پر مل کر کام کرنے کی حامی بھری ہے۔ منصوبے کے مطابق روس کی تیار کردہ ویکسین کی بڑے پیمانے پر پیداوار کے لیے دونوں ممالک مل کر کام کریں گے۔روس نے رواں سال ماہ آگست میں ویکسین کیی تیاری کا دعویٰ کیا تھا جس کی دنیا بھر میں آزمائش جاری ہے۔ جبکہ روس کا کہنا ہے کہ اسے دنیا بھر سے 20 سے زائد ممالک نے مجموعی طور پر ایک ارب ویکسین ٹیکوں کا آرڈر دے دیا ہے۔فون پر ہوئی گفتگو میں سعودی بادشاہ نے کورونا کے خلاف مشترکہ حکمت عملی اپنانے کی ضرورت پر بھی زور دیا اور بڑے پیمانے پر ویکسین کی پیداوار کے لیے کاوشوں کو بڑھانے پر اتفاق رائے بھی ہوا۔یاد رہے سعودیہ عرب بھی ان 20 ممالک میں شامل ہے جنہوں نے روس سے کورونا ویکسین کی طلب کر رکھی ہے۔ ...
سائنسدانوں کا جراثیموں کو کرنٹ لگا کر مارنے کا منصوبہ

سائنسدانوں کا جراثیموں کو کرنٹ لگا کر مارنے کا منصوبہ

طب
طبی ماہرین نے جرثوموں یعنی بیکٹیریا کو ہلاک کرنے کے لیے نیا طریقہ ڈھونڈ نکالا ہے۔ محققین کا کہنا ہے کہ اب صرف 1.5 ایمپیئر بجلی کے آدھے گھنٹے تک مسلسل جھٹکوں سے جراثیموں کو پھاڑا جا سکے گا۔ اور سخت سے سخت جان جراثیم موت کے گھاٹ اتر جائے گا۔تکنیک کا فلسفہ کچھ یوں ہے کہ ہم سب جانتے ہیں اگر کسی جاندار کے جسم میں سے بجلی گزر جائے تو اس کی موت واقع ہوسکتی ہے۔ بجلی کے جھٹکوں سے ہونے والی اموات اس کے واضح اور عام فہم مثال ہے۔ تاہم اگر یہی بجلی اتنی کمزور رکھی جائے کہ انسانی جسم کےلیے بالکل بے ضرر ہو تو کیا پھر بھی اس کا جراثیموں پر اثر ہوتا ہے؟اس سوال کا جواب ڈھونڈتے ڈھونڈتے محققین اس نئی تکنیک کو ڈھونڈنے میں کامیاب ہوئے ہیں۔ محققین نے تجربہ گاہ میں ایسے جرثوموں جو کہ اینٹی بائیوٹک ادویات کے خلاف مدافعت پیدا کر چکے ہیں پر تجربہ کرتے ہوئے پایا کہ مختلف ایمپیئر اور وولٹیج کے جھٹکے دینے سے...
جدید شہری زندگی کے باعث جانوروں سے انسانوں میں بیماریوں کی منتقلی کا خطرہ بڑھ گیا: تحقیق

جدید شہری زندگی کے باعث جانوروں سے انسانوں میں بیماریوں کی منتقلی کا خطرہ بڑھ گیا: تحقیق

طب, موسم و ماحولیات
وبائی امراض پرتحقیق کرنے والے محققین نے تنبیہ کی ہے کہ جانوروں سے انسانوں میں بیماریاں منتقل ہونے کے خطرے میں اضافہ ہو رہا ہے۔ کورونا وائرس سے بچاؤ کی ویکسین کی تلاش میں کلیدی کردار ادا کرنے والی محقق سارہ گلبرٹ کا کہنا ہے کہ ہماری جدید طرز زندگی کی وجہ سے جانوروں سے انسانوں میں بیماریاں پھیلنے کے امکانات بڑھ گئے ہیں، خاص طور پر گنجان آبادیوں میں اس کا خطرہ شدید ہو گیا ہے۔ جبکہ بین الااقوامی سفر میں اضافے و تیزی کے ساتھ ساتھ آبادیوں میں قدرتی ماحول کی کمی نے بھی خطرے کو شدید کر دیا ہے۔ماہرین کا ماننا ہے کہ کورونا وائرس کا ماخذ تاحال ایک راز ہے لیکن کچھ سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ یہ وائرس چمگادڑوں سے کسی اور جانور کے ذریعے انسانوں میں منتقل ہوا ہے۔حال ہی میں دنیا بھر میں پھیلنے والی بیماریاں جیسے کہ ایبولا، سارس اور ویسٹ نائل وائرس بھی جانوروں سے شروع ہوئے لیکن کووڈ 19 ان میں سب سے ...